ڈبلیو ڈبلیو ای میں شلوار قمیض پہنی یہ ریسلر کون ہے ؟

ڈبلیو ڈبلیو ای میں گزشتہ برس پہلی بار ایک پاکستانی ریسلر کی شمولیت ہوئی جبکہ متعدد بھارتی ریسلرز وہاں موجود ہیں جیسے ٹائیگر جیت سنگ سے لے کر دی گریٹ کھالی تک، جبکہ موجود ڈبلیو ڈبلیو ای چیمپئن بھی جندر مہل نامی انڈین ریسلر ہے۔ مگر وہاں کبھی بھی برصغیر سے تعلق رکھنے والی خاتون ریسلر نظر نہیں آئی مگر اب ایک شلوار قمیض میں لڑنے والی ریسلر ڈبلیو ڈبلیو ای میں نظر آئی ہے جس کی ویڈیو وائرل ہوگئی ہے۔

یہ ہیں کویتا دیوی، جو کہ بھارتی ریاست ہریانہ سے تعلق رکھتی ہیں اور انہوں نے گریٹ کھالی سے ان کی اکیڈمی میں تربیت حاصل کرکے ڈبلیو ڈبلیو ای کے پہلے مائی ینگ کلاسیک ویمن ٹورنامنٹ میں گزشتہ ماہ ڈیبیو کیا۔ اہم بات یہ ہے کہ وہ رنگ میں شلوار قمیض میں جاکر لڑتی ہیں۔ کویتا دیوی سابق پاور لفٹر اور ایم ایم اے فائٹر رہ چکی ہیں جبکہ وہ ایک پولیس آفیسر بھی تھیں مگر اب وہ ڈبلیو ڈبلیو ای میں کیرئیر بنانے میں دلچسپی رکھتی ہیں۔

تاہم بدقسمتی سے اس خاتون کو پہلے میچ میں شکست کے بعد ٹورنامنٹ سے باہر ہونا پڑا اور ایک انٹرویو کے دوران ان کا کہنا تھا کہ اس ایونٹ کا حصہ بننا اچھا تجربہ تھا کیونکہ اس میں دنیا بھر کی ریسلرز شریک تھیں۔ یہ خاتون ساﺅتھ ایشین گیمز میں پاور لفٹنگ میں طلائی تمغہ بھی جیت چکی ہیں مگر ان کے بقول اس شعبے میں کامیابی کے باوجود کچھ کمی سی محسوس ہوتی تھی اور اسی لیے وہ ریسلنگ کی جانب گئیں، اور آغاز نے ہی انہیں سیلیبرٹی بنا دیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ میرے پاس تیکنیک، صلاحیت اور مضبوطی ہے اور ڈبلیو ڈبلیو ای میں کامیابی کے لیے مجھے وہاں کی ریسلرز کی طرح کے گلیمر کی ضرورت نہیں ‘مجھے بس یہ سیکھنا ہے کہ ہجوم کے سامنے پرفارم کیسے کرتے ہیں اور باقی سب بھی بتدریج سیکھ لوں گی’۔ کویتا دیوی پہلی بھارتی ڈبلیو ڈبلیو ای ویمن چیمپئن بننے کا عزم رکھتی ہیں اور اس مقصد کے لیے ہر ممکن کوشش کرنا چاہتی ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ان کی آبائی ریاست ہریانہ میں دیہاتی میرے والد سے کہتے تھے ‘لڑکی کو اکیلے باہر مت بھیجو ایسے، شادی کرا دو اس کی، خوش قسمتی سے میرے بھائی نے اس صورتحال میں میرا ساتھ دیا اور وہ کہتا تھا کہ کویتا تم کھیل پر دھیان دو اور ان لوگوں کو مجھ پر چھوڑ دو’۔

اپنا تبصرہ بھیجیں