ماضی کی معروف گلوکارہ گل بہار بانو کی تلاش میں پولیس کا اُن کے بھائی کے گھر پہ چھاپہ ، بازیاب کروا کر اسپتال سے میڈیکل کروایا اور واپس گھر چھوڑ دیا

ماضی کی معروف گلوکارہ گل بہار بانو اِن دنوں کسمپرسی کی حالت میں زندگی گزار رہی ہیں ، گذشتہ روز پولیس نے گلوگارہ کو ان کے بھائی کے گھر سے حفاظتی تحویل میں لے کرعلاج کے لیے اسپتال منتقل کیا ، تاہم ذہنی حالت کی خرابی کی تصدیق کے بعد انہیں واپس گھر چھوڑ گئی ۔ پولیس کواطلاع ملی تھی کہ گل بہار بانو کو ان کے بھائی نے گھر میں قید کر رکھا ہے ۔ جس پر سمہ سٹی پولیس نے گزشتہ روز قصبہ خانقاہ شریف میں زبردستی قید کرنے کے الزام پر گلوکارہ کے بھائی کے گھر پر چھاپہ مار کر انہیں اپنی حفاظتی تحویل میں لیا تھا ۔

اس موقع پر پولیس کو میڈیکل رپورٹ دکھائی گئی تھی کہ گلوکارہ کی ذہنی حالت ٹھیک نہیں اور ڈاکٹروں نے انہیں علیحدہ رکھنے کی ہدایت کی ہے ۔ گلوگارہ کے بھائی کے مطابق گلبہار بانو 2009 سے ذہنی مرض ‘ شیزوفرینیا ‘ کا شکار ہیں ، یہی وجہ ہے کہ انہیں گھر میں بند کرکے رکھا جاتا ہے ۔ تاہم پولیس کا کہنا تھا کہ گل بہار بانو کو اسپتال میں داخل کروا کے ان کا مناسب علاج کرایا جائے گا ۔ بعدازاں جب اسپتال میں سابق گلوکارہ کی ذہنی حالت خراب ہونے کی تصدیق ہوئی تو پولیس نے ہاتھ کھڑے کرلیے اور آدھی رات کو انہیں واپس گھر چھوڑ گئی ۔