معروف پاکستانی ماڈل انعم تنولی کی خودکشی سے چند گھنٹے قبل ریکارڈ کیا گیا ویڈیو پیغام منظرعام پر

معروف پاکستانی ماڈل انعم تنولی کی خودکشی کی خبر سامنے آئی تو ایک طوفان کھڑا ہو گیا اور بتایا گیا کہ انہوں نے ذہنی دباﺅ کے باعث خودکشی کی ہے ۔ پولیس نے تصدیق کی کہ انعم تنولی فیشن ڈیزائنگ میں اپنی تعلیم مکمل کرنے کے بعد کچھ عرصہ قبل ہی اٹلی سے پاکستان منتقل ہوئی تھیں اور ڈیفنس میں ان کی رہائش گاہ سے پھندے کیساتھ جھولتی لاش ملی جس پر انہیں جناح ہسپتال منتقل کیا گیا ۔ انعم تنولی کی والدہ نے بتایا کہ وہ ذہنی دباﺅ کا شکار تھی اور اسی روز ایک تھراپسٹ کیساتھ اس کی میٹنگ بھی تھی ۔ خودکشی کی خبر سامنے آنے کے بعد سوشل میڈیا پر ان کی آخری ویڈیو بھی وائرل ہو گئی ہے جس میں انہیں لوگوں سے کہنے سنا جا سکتا ہے کہ انہیں تنگ کرنا اور ہراساں کرنا بند کیا جائے۔

اُنہوں نے کہا کہ ہراساں کرنا بری بات ہے ، ایسا مت کریں ، یہ بزدلوں کا طریقہ ہے اور یہ بہت ہی برا طریقہ ہے ۔ بہت سے لوگ ہیں جنہیں اپنی زندگی میں ہراسگی کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔ آپ اسے خود پر اثرانداز نہ ہونے دیں اور اپنے حوصلے پست مت ہونے دیں ۔ جو ایسا کر رے ہیں وہ اس قابل نہیں ہیں کہ انہیں توجہ دی جائے ۔ انہوں نے جو ٹی شرٹ پہن رکھی ہے اس پر بھی یہی لکھا ہے کہ ہراساں کرنے والے دور رہیں اور کچھ میڈیا رپورٹس کا کہنا ہے کہ یہ ویڈیو پیغام انہوں نے خودکشی سے چند گھنٹے قبل ہی ریکارڈ کیا تھا ۔