ساؤتھ انڈین اداکارہ امالا پال نے ایسا شرمناک انکشاف کیا ہے کہ پوری فلم انڈسٹری میں ہنگامہ برپا ہو گیا ہے

ہالی ووڈ میں اداکاراؤں کو جنسی طور پر ہراساں کئے جانے کے واقعات تو سامنے آتے ہی رہتے ہیں لیکن بالی ووڈ بھی اس معاملے میں پیچھے نہیں ہے جس کا اندازہ ریچا چڈھا اور رادھیکا آپتے کے ان بیانات سے ہوتا ہے جس میں انہوں نے بتایا تھا کہ کس طرح کام کے دوران خواتین کو جنسی طور پر ہراساں کیا جاتا ہے۔ ان اداکاراؤں نے اپنے ساتھ آنے والے واقعات تو بتا دئیے مگر یہ وحشی درندے کون تھے؟ یہ بتانا گوارہ نہ کیا تاہم اب ساؤتھ انڈین اداکارہ امالا پال نے ایسا شرمناک انکشاف کیا ہے کہ پوری فلم انڈسٹری میں ہنگامہ برپا ہو گیا ہے۔ امالا پال کے ساتھ یہ واقعہ ڈانس ریہرسلز کے دوران پیش آیا جب ایک اجنبی، جو کسی اور کے کہنے پر یہ سب کر رہا تھا ، ان کے پاس آیا اور جنسی تعلق قائم کرنے کو کہا ۔

32 سالہ اداکارہ یہ واقعہ پیش آنے کے بعد پولیس سٹیشن گئیں اور اس اجنبی شخص کیخلاف شکایت درج کروائی۔ بھارتی خبر رساں ادارے کے مطابق امالا نے کہا کہ ”میں ششدر رہ گئی، مجھے بہت ذلت محسوس ہوئی۔ میں ایک خودمختار عورت ہوں اور کسی بھی ڈسٹربنس کے بغیر کام کرنا پسند کرتی ہوں ۔ ایسا لگ رہا تھا کہ جیسے وہ یہ سب کچھ کسی اور کے کہنے پر کر رہا ہے ۔ میں نے خود کو انتہائی غیر محفوظ محسوس کیا ۔“ بھارتی خبر رساں ادارے کے مطابق اس شخص کو پہچان لیا گیا ۔ ازاجیسن نامی یہ شخص مبینہ طور پر ایک بزنس مین ہے جو چنائی میں ایسٹ کوسٹ روڈ پر رہتا ہے ۔ مذکورہ شخص کیخلاف انڈین پینل کوڈ اور تامل ناڈو پروہیبیشن آف ہریسمنٹ آف ویمن ایکٹ کے تحت دفعہ 354A اور 509 کے تحت مقدمہ درج کر لیا گیا اور پیر کے روز اسے گرفتار بھی کر لیا گیا۔