’’جیتو پاکستان‘‘ کا بڑا فراڈ پکڑا گیا ، ٹی وی ناظرین ششدر

جیتو پاکستان اے آر وائی کا ایک ایسا گیم شو ہے جسے تمام چھوٹے بڑے نہایت شوق سے دیکھتے ہیں اور لوگوں کی کوشش ہوتی ہے کہ ہمیں بھی اس پروگرام میں جانے کا موقع مل جائے اور ہم بھی فہد مصطفیٰ کے اس پروگرام میں شریک ہو کر انعامات حاصل کر سکیں، جیتو پاکستان کا ریٹنگ کے اعتبار سے ٹاپ پروگراموں میں شمار ہوتا ہے۔ اب اس جیتو پاکستان پروگرام میں کرپشن کا انکشاف کیا گیا ہے، جب اس کرپشن کے بارے میں اے آر وائی گروپ کے سی ای او سلمان اقبال کو پتہ چلا تو انہوں نے سخت کارروائی کا حکم دیتے ہوئے کسی سے رعایت نہ برتنے کا کہا ہے۔

اس پروگرام کی میزبانی فہد مصطفیٰ کرتے ہیں اور اس میں لاکھوں کے انعامات شرکاء میں تقسیم کیے جاتے ہیں۔ سینئر صحافی علی عمران جونیئر نے دعویٰ کرتے ہوئے کہا کہ جیتو پاکستان میں ایک کروڑ 90 لاکھ روپے کی کرپشن پکڑی گئی ہے اور اس کرپشن کے بارے اے آر وائی گروپ کے سی ای او سلمان اقبال کو بھی پتہ چل چکا ہے جس کے بعد انہوں نے سخت کارروائی کا حکم دیا ہے، اس بارے میں صحافتی حلقوں کا کہنا کہ اس بات کا قوی امکان ہے کہ جیتو پاکستان کی پوری ٹیم کو ہی فارغ کر دیا جائے۔

سینئر صحافی علی عمران جونیئر نے کہا کہ اے آر وائی کے پروگرام جیتو پاکستان میں کرپشن بڑے دلچسپ انداز میں کی جاتی تھی، ٹیم کے ارکان پورے پورے خاندان کو پروگرام میں شرکت کے لیے بلاتے تھے اور پھر انہیں انعامات سے لاد دیا جاتا تھا اور اس کے بعد یہ انعامات آپس میں تقسیم کر لیے جاتے تھے۔