جاپانی خلائی جہاز ساڑھے 3 سال کا سفر طے کرکے یوگوو سیارچے پر اتر گیا

جاپان کا خلائی جہاز ہایابوسا – دوم ساڑھے 3 برس کے سفر کے بعد یوگوو سیارچے پر اترگیا ہے ۔ خلائی جہاز سیارچے کی تصاویر لے گا ۔ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ تحقیق سے زمین کے وجود سے متعلق معلومات حاصل کی جائیں گی ۔ برطانوی میڈیا کے مطابق دو پروب ریوگو نام کے سیارچے پر اترگئے ، جاپان کے خلائی ادارے نے خلائی جہاز ہایابوسا – دوم کی مدد سے زمین سے 32 کروڑ کلومیٹر دور ایک سیارچے کی طرف 3 سال پہلے یہ 2 روبوٹ روانہ کئے گئے تھے ۔ روور اے ون اور بی ون سیارچے کی کمزور کشش ثقل کا فائدہ اٹھاتے ہوئے سیارچے کا چکر لگائیں گے اور ساتھ ہی ساتھ اس کی سطح کی تصاویر بھی لیں گے ۔

ہایابوسا – دوم ساڑھے تین برس کے سفر کے بعد اس سال جون میں ریوگو کے قریب پہنچا تھا ۔ یہ انسانی تاریخ میں محض دوسرا موقع ہے کہ کسی خلائی مشن میں سیارچے پر روبوٹ اتارے گئے ۔ رپورٹ کے مطابق ایک کلومیٹر چوڑا ریوگو سیارچہ ایک انتہائی قدیم سیارچہ ہے جو نظامِ شمسی کے ساتھ ہی وجود میں آیا تھا ۔ سائنس دانوں کا خیال ہے کہ اس سیارچے پر ملنے والے شواہد سے انھیں ہماری زمین کی تاریخ کو سمجھنے میں مدد ملے گی ۔ تازہ ترین معلومات کے مطابق خلائی جہاز دونوں روبوٹ اتار کر سیارچے کے مدار میں محفوظ فاصلے پر واپس آ گیا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں