کورونا وائرس: مرد و خواتین کو سیلون یاپارلر پر احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کی ہدایت

لاہور (اردونیوز) کورونا وائرس کا پھیلاؤ روکنے کیلئے مردوخواتین کو بیوٹی پارلر یا سیلون پر بھی احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کی تجویز پیش کردی گئی، اسکن اسپیشلسٹ کا کہنا ہے کہ مردوخواتین بناؤ سنگھار کا سامان احتیاط سے استعمال کریں، اپنے چہرے اور ناک کو زیادہ مت چھوئیں،سیلون سے فارغ ہوتے ہی فوراً ہاتھوں اور منہ کو اچھی طرح سے دھو لیں۔

ت فصیلات کے مطابق کورونا وائرس کسی بھی شخص سے ہوتا ہوا کسی بھی جگہ پہنچ کر اپنے اثرات دوسرے لوگوں پر چھوڑ سکتا ہے، اس لیے پبلک مقامات سمیت ہر جگہ پر نہایت احتیاط کی ضرورت ہے۔ امراض جلد کے ماہرین کا کہنا ہے کہ مردوخواتین بناؤ سنگھار کا سامان احتیاط ست استعمال کریں۔ اپنے چہرے اور ناک کو زیادہ مت چھوئیں۔
بیوٹی پارلر یا سیلون میں ہیئربرش اور کنگھے یا جن چیزوں کا استعمال کیا جارہا ہے، یہ تسلی کرلینی چاہیے کہ کیا اس سامان کی باقاعدگی سے صفائی کی جارہی ہے،سیلون پر موجود تولیے کے استعمال سے بھی گریز کیا جائے۔

اسی طرح سیلون پر کام کرنے والے شخص یا بیوٹی پارلر پر کام کرنے والی خاتون کو چاہیے کہ اپنے ہاتھوں کو تھوڑی تھوڑی دیر بعد واش کریں، جبکہ جو کسٹمر ہے اس کو بھی چاہیے کہ احتیاطی تدابیر اختیار کریں، اپنی آنکھوں اور ناک کو مت چھوئیں، بلکہ سیلون سے فارغ ہوتے ہی فوراً ہاتھوں اور منہ کو اچھی طرح کسی صابن یا فیس واش سے دھو لیں۔ دوسری جانب پنجاب میں بھی کورونا وائرس کا پہلا کیس سامنے آگیا ہے۔

وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد نے تصدیق کی ہے کہ 4 روز قبل دبئی سے لاہور آنے والے مسافر نے شبہ ہونے پر ٹیسٹ کروایا جس کی رپورٹ مثبت آئی ہے۔ ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا کہ مسافر نے ایک نجی لیبارٹری سے ٹیسٹ کروایا جس میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوگئی ہے۔ متاثرہ شخص کو آئسولیشن میں منتقل کردیا گیا ہے جبکہ اس کے گھر کے ملازمین اور اہل خانہ کے ٹیسٹ کیے جارہے ہیں۔

ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا کہ رپورٹ آنے پر سرکاری طور پر تصدیق کریں گے۔ واضح رہے کہ گزشتہ روز اس ھوالے سے خبر آئی تھی کہ لاہور میں کورونا وائرس کا کیس سامنے آیا ہے لیکن بعد میں ترجمان حکومتِ پنجاب نے اس کی تردید کردی تھی کہ ایسا کوئی کیس سامنے نہیں آیا ہے, ترجمان پنجاب حکومت مسرت چیمہ نے کہا تھا کہ ابھی تک پنجاب میں کورونا وائرس کے ایک بھی مریض کی تصدیق نہیں ہوئی ہے مسرت چیمہ نے اپنے ٹویٹر پیغام میں بتایا تھا کہ پنجاب میں ابھی تک 90 لوگوں کا ٹیسٹ کیا گیا ہے البتہ تاحال کوئی مریض سامنے نہیں آیا ہے۔ تاہم اب وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد نے تصدیق کردی ہے۔ اسی طرح محکمہ داخلہ پنجاب نے صوبے بھر میں دفعہ 144نافذ کردی ہے۔