پنجاب کی گڈ گورننس میں وزیراعظم عمران خان کا ضلع ترقی میں سب سے پیچھے رہا

اسلام آباد (اُردو نیوز) پنجاب کی گڈ گورننس میں وزیراعظم عمران خان کا ضلع ترقی میں سب سے پیچھے رہا ۔پنجاب میں 177 ارب روپے کے فنڈزجاری کیے گئے جبکہ نصف مالی سال گزرنے کے باوجود فنڈز 85 ارب روپے ہی خرچ ہو سکے جبکہ پنجاب کا دل لاہور 4 ارب روپے کے استعمال کے ساتھ ناقص کارکردگی والے اضلاع میں پانچویں نمبر پررہا ۔

وفاقی وزیر فواد چودھری کا ترقیاتی منصوبوں میں پنجاب حکومت سے شکوہ سچ نکلا ۔تفصیلات کے مطابق محکمہ منصوبہ بندی وترقی کے زرائع نے بتایا ہے کہ کے مطابق لودھراں کے لیئے70 کروڑ روپے کا اجرا ہوا ہے استعمال صرف 13 فیصد ہوا ہے ۔زرائع کے مطابق فواد چودھری کے ضلع کے لیے 3 ارب روپے کا پیکج تھا جبکہ استعمال 15 فیصد ہوا ہے ۔محکمہ منصوبہ بندی وترقی کے ذرائع کے مطابق میانوالی کیلیے 4 ارب روپیکے فنڈزکااجرا ہوا تھا جبکہ استعمال صرف 10 فیصد ہوا ہے ۔

جہلم ترقیاتی فنڈز کے استعمال میں ناقص کارگردگی کے ساتھ 30 ویں نمبر پر ہے جبکہ لاہور 4ارب روپے کے استعمال کے ساتھ ناقص کارکردگی والے اضلاع میں پانچویں نمبر پررہے زرائع کے مطابق وزیر ِاعلی پنجاب عثمان بزدار کے ضلع ڈیرہ غازی خان میں6 ارب روپے کا اجرا کیا گیا جبکہ استعمال 41 فیصد ہوا ہے ۔گجرات کے لیے ایک ارب روپے کے فنڈز کا اجرا کیا گیا جبکہ استعمال 27 فیصد ہوا ہے ۔

محکمہ منصوبہ بندی وترقی کے زرائع کے مطابق چکوال میں فنڈز کا استعمال 15 فیصد،راولپنڈی 14 فیصداور پاکپتن کی 10 فیصد کارگردگی رہی ہے ۔گجرات کے لیے ایک ارب روپے کے فنڈز کا اجر ہوا جبکہ استعمال 27 فیصد ہوا ۔ ملتان میں 18 فیصد اور رحیم یار خان میں 17 فیصد فنڈز کا استعمال کیا گیا ہے محکمہ خزانہ کے حکام کے مطابق پنجاب میں 177 ارب روپے کے فنڈزجاری کیے جاچکے، پنجاب بھر میں نصف مالی سال گزرنے کے باوجود فنڈز 85 ارب روپے ہی خرچ ہو سکے۔