عمران خان کے قریبی ساتھی بابر اعوان کے ساتھ آج کیا بڑی کارروائی ہونے والی ہے ؟ جانیں

اسلام آباد( ویب ڈیسک ) نندی پور پاور پراجیکٹ ریفرنس میں سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف اور بابراعوان پر فرد جرم آج عائد کی جائے گی۔ تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت میں بابر اعوان کے خلاف نندی پور پاور پراجیکٹ میں تاخیر سے متعلق ریفرنس پر سماعت احتساب عدالت کے جج محمد ارشدملک کریں گے۔ نندی پور پاور پراجیکٹ میں بابراعوان، سابق وزیراعظم پرویز اشرف، سابق سیکٹری قانون مسعود چشتی ، ریاض کیانی، ڈاکٹر ریاض محمود، سابق ریسرچ کنسلٹنٹ وزارت قانون شمائلہ محمود ملزمان میں شامل ہیں۔ احتساب عدالت نامزد ساتوں ملزمان کو فرد جرم عائد کرنے کے لیے طلب کررکھا ہے۔ سپریم کورٹ کے حکم پر منصوبے میں تاخیر پرجوڈیشل کمیشن تشکیل دیا گیا تھا، جوڈیشل کمیشن نے تحقیقات کے لیے معاملہ نیب کوبھیجا تھا۔ پیپلزپارٹی کے دورمیں وزرا کی ملی بھگت سے منصوبے میں 2 سال کی تاخیر ہونے سے قومی خزانے کو 27 ارب کا نقصان پہنچا تھا۔ یاد رہے گزشتہ ماہ 11 فروری کو عدالت نے فریقین کے دلائل مکمل ہونے پر بابر اعوان کی بریت پر فیصلہ محفوظ کیا گیا تھا۔

واضح رہے نیب نے پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اور وزیراعظم کے مشیر برائے پارلیمانی امور بابر اعوان کے خلاف نندی پور پاور پراجیکٹ میں کرپشن کا ریفرنس دائر کیا تھا اور بابر اعوان، راجہ پرویز اشرف سمیت 7 ملزمان کو نامزد کیا گیا تھا۔ بعدازاں وزیر اعظم کے پارلیمانی مشیر بابر اعوان ایڈووکیٹ قومی احتساب بیورو کے ریفرنس میں عائد الزامات پر اپنے عہدے سے مستعفی ہوگئے تھے اور ان کا استعفیٰ وزیر اعظم عمران خان نے منظور کیا تھا۔ نندی پور منصوبے کی تاخیر سے قومی خزانے کو 27 ارب روپے کا نقصان پہنچایا گیا تھا۔ سابق وزیر قانون بابر اعوان کی فرمانبرداری، والدہ کے کہنے پر نندی پوربجلی گھر ریفرنس میں بریت کی درخواست واپس لے لی، احتساب عدالت آج ملزمان پر فرد جرم عائد کرے گی۔ سابق وزیراعظم راجہ پرویزاشرف سمیت 7 ملزمان کو نوٹس جاری کر دیئے گئےہیں ۔ بابر اعوان نے بریت درخواست واپس لینے کی وجہ یہ بتائی کہ وہ خواتین کے عالمی دن پر ضعیف والدہ کو ملنے گئے تو انہوں نے مروجہ قانون پر چلنے کی ہدایت کی۔ عدالت نے حکم دیا تھا کہ تمام ملزمان آج کے روزفرد جرم کیلئے اپنی حاضری یقینی بنائیں۔