نواز شریف کو جناح اسپتال منتقل کرنے کے فیصلے پر شریف خاندان کا ردعمل

لاہور(نیوز ڈیسک) نواز شریف کو جناح اسپتال منتقل کرنے کے فیصلے پر شریف خاندان نے تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ جناح اسپتال منتقل ہونا ہے یا نہیں، حتمی فیصلہ نواز شریف خود کرینگے۔ ۔تفصیلات کے مطابق نواز شریف کی طبیعت ایک مرتبہ دوبارہ تشویشناک ہو گئی ہے جن کے بعد انکو اسپتال منتقل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

اس موقع پر محکمہ داخلہ پنجاب کی جانب سے مراسلہ جاری کر دیا گیا ہے۔مراسلے کے مطابق نوازشریف کو جناح اسپتال منتقل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ مراسلے کے مطابق سابق وزیر اعظم نواز شریف کو میڈیکل بورڈ کی سفارشات پر اسپتال منتقل کیا جارہا ہے۔جناح اسپتال میں انکو مکمل سیکیورٹی اور طبی سہولیات فراہم کی جائیں گی۔اس حوالے سے مزید خبر یہ ہے کہ سابق وزیر اعظم نواز شریف کو جلد ہی اسپتال منتقل کر دیا جائے گا۔

دوسری جانب جناح اسپتال کی سیکیورٹی سخت کر دی گئی ہے جبکہ انکے لیے کمرے کی تیاریاں بھی مکمل کر لی جائیں گی۔تاہم شریف خاندان نے حکومت کے اس فیصلے پر ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ اسپیشل میڈیکل بورڈ نےنوازشریف کوامراض قلب کےاسپتال منتقل کرنیکی سفارش کی کیونکہ ٹیسٹ کی رپورٹ میں نواز شریف کو دل کے مرض کی تشخیص ہوئی۔انکا کہنا تھا کہ نواز شریف کا تھیلیم اسکین پنجاب انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی سے کرایا گیا۔

پنجاب حکومت نواز شریف کی صحت سےمتعلق مجرمانہ غفلت کی مرتکب ہو رہی ہے۔حکومتی اقدامات نوازشریف کوعلاج فراہم کرنیکی بجائےذہنی اذیت کیلیے ہیں۔ جناح اسپتال منتقل ہونا ہے یا نہیں، حتمی فیصلہ نواز شریف خود کرینگے۔