نواز حکومت کے خوف سے ملک چھوڑنے والے سابق چئیرمین نادرا طارق ملک اب وطن واپس آئے تو تحریک انصاف کی حکومت نے ان کے ساتھ جو سلوک کیا ، جان کر آپ کو بھی دکھ ہوگا

سابق چیئر مین نادرا طارق ملک نے کہا ہے کہ میں اپنے بیمار والد کی خبر گیری کیلئے پاکستان آیا اور میرا نام ای سی ایل میں ڈال دیا گیا ، ماتحت عدالت میں میرا کیس ایک ماہ سے نہیں سنا جا رہا ، لوئر کورٹس دیگر ”بلاولوں“ پر بھی توجہ دیں ۔ ایک نجی نیوز چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے سابق چیئرمین نادرا طارق ملک نے کہا کہ جب مسلم لیگ ن کی حکومت نے مجھے نکالا تو اسلام آباد ہائیکورٹ کی جانب سے بڑا زبردست فیصلہ آیا لیکن میں نے جاب چھوڑی اور بیرون ملک چلا گیا ۔

میں آج کل اقوام متحدہ میں چیف ٹیکنیکل ایڈوائزر کے طور پر کام کررہا ہوں ۔ انہوں نے کہا کہ میں نے اپنے بیمار والد کی خبر گیری کیلئے پاکستان آنا چاہا تو مجھے پتہ چلا کہ میرا پاسپورٹ بلاک ہے جس پر میں عدالت گیا اور حفاظتی ضمانت لیکر پاکستان آیا ۔ انہوں نے کہا کہ اب مجھے پتہ چلا ہے کہ میرا نام ای سی ایل میں ڈال دیا گیا ہے ، میں نے وزارت دفاع میں جا کر ڈپٹی سیکرٹری سے تصدیق کی ہے کہ میرا نام ای سی ایل میں موجود ہے ۔

ان کا کہنا تھا کہ سپریم کورٹ نے بلاول بھٹو کا نام تو ای سی ایل سے نکال دیا لیکن لوئر کورٹ کا یہ حال ہے کہ ایک ماہ سے میرے کیس کی سماعت نہیں ہو رہی ، انہوں نے کہا کہ لوئر کورٹس میں بھی وکیلوں کو چاہئے کہ ہڑتال ختم تاکہ دیگر بلاولوں کی بھی سنی جائے ، ان کا کہنا تھا کہ میرے اوپر کوئی کرپشن یا دہشت گردی کا الزام نہیں ، دوہری شہریت کا معاملہ ہے جس کی میں ایف آئی اے میں پیش ہو کر وضاحت کرچکا ہوں ۔