تبدیلی آنہیں رہی تبدیلی آگئی ، پٹرول کی قیمت میں کمی شہریوں میں خوشی کی لہر دوڑ گئی

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) عالمی مارکیٹ میں خام تیل کی قیمت میں 4 ڈالر فی بیرل کمی ہونے سے پٹرولیم مصنوعات میں کمی کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ عوام کے لیے ایک خوشخبری آ گئی ہے۔ پٹرول کی قیمت میں 5 روپے فی لیٹر کمی کا امکان ہے۔جب کہ مٹی کا تیل بھی 8روپے فی لیٹر سستا ہونے کا امکان ہے۔

اوگرا پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں سے متعلق سمری 30دسمبر کو وزارت پٹرلیم کو ارسال کرے گی۔ واضح رہے کہ اس سے قبل گذشتہ ماہ کے آخر میں حکومت نے پٹرول اور ڈیزل کی قیمت میں دو ، دو روپے فی لٹر کمی کا اعلان کیا تھا۔ وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ میں پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں پر بات کرنا چاہتا ہوں۔ا اکتوبر میں عالمی منڈی میں تیل کی قیمتوں میں اضافہ ہوا تھا۔

اکتوبر میں ہی عالمی سطح پر پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں مزید بڑھیں،اکتوبرمیں ہی پیٹرولیم مصنوعات میں قیمتوں میں عالمی سطح پر اضافہ ہوا لیکن ہم نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں نہیں بڑھائیں۔ اکتوبر میں جتنی پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں بڑھیں حکومت نے آدھی قیمت بڑھائی۔ڈیزل پر لیویز ڈیوٹی 8 سے کم کرکے 6.51 روپے کی۔ ن لیگ کے دور میں پٹرول پر 15 فیصد ٹیکس تھا۔نئی حکومت آئی تو اگست کے آخر میں پٹرول کی قیمتیں کم ہوئیں۔ اس سے قبل مئی میں پٹرول پر جی ایس ٹی 15 فیصد سے کم کرکے ساڑھے 4 فیصد کیا گیا تھا۔

اسد عمر نے مزید کہا تھا کہ ہم پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں دو، دو روپے فی لٹر جبکہ مٹی کے تیل میں تین روپےاور لائٹ ڈیزل کی قیمت میں 5 روپے فی لٹر کمی کر رہے ہیں، ہماری کوشش ہوتی ہے کہ عوام پر کم سے کم بوجھ ڈالا جائے۔تاہم اب ایک مرتبہ پھر پٹرول کی قیمت میں دو سے تین روپے فی لٹر کمی کا امکان پیدا ہو گیا جس سے عوام کو ریلیف ملنے کا امکان ہے۔