حکومت پنجاب کا سموگ کے خاتمے کیلئے آپریشن شروع

لاہور (اُردو نیوز) حکومت پنجاب نے سموگ کے خاتمے کیلئے آپریشن شروع کردیا، حکومت نے3 نومبر تک بھٹے بند کرنے کا حکم دیا تھا،57 بھٹے آج رات تک بند کردیے جائیں گے، پرانی ٹیکنالوجی والے اینٹوں کے بھٹے ہمیشہ کیلئے بند کر دیے جائیں گے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق ڈپٹی ڈائریکٹر محکمہ ماحولیات مصباح الحق لودھی کا کہنا ہے کہ پنجاب بھر میں اینٹوں کے بھٹوں کیخلاف آپریشن شروع کردی گئی ہے۔

بھٹے رضا کارانہ طور پر3 نومبر تک بند کرنے کا حکم تھا۔ تاہم آپریشن کے تحت 57 بھٹے آج رات تک بند کردیےجائیں گے۔ ڈپٹی ڈائریکٹر محکمہ ماحولیات نے کہا کہ پرانی ٹیکنالوجی والے اینٹوں کے بھٹے ہمیشہ کیلئے بند کر دیے جائینگے۔ وہی بھٹے چلیں گے جونئی ٹیکنالوجی پرمنتقل ہوجائیں گے۔ ڈپٹی ڈائریکٹر محکمہ ماحولیات نے کہا کہ سموگ کیخلاف اورماحولیاتی آلودگی کے خاتمے کیلئے پرانے بھٹے بند کررہے ہیں۔

160میں سے103 بھٹے رضا کارانہ طور پربند ہوئے۔ دوسری جانب سینئر صوبائی وزیر پنجاب عبدالعلیم خان نے اپنے سیاسی دفتر میں لوگوں کے مسائل سننے کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ حالات پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ درحقیقت عمران خان کے ویژن اور موجودہ حکومت کی کامیابی سے خائف بعض عناصر مسلسل سازشوں میں مصروف ہیں اور وہ ہر قیمت پر تحریک انصاف کو ناکام دیکھنا چاہتے ہیں لیکن ایسی طاقتوں کو5 سال انتظار کرنا ہوگا انہیں عوام گھاس نہیں ڈالیں گے اور انشاء اللہ جلد ہی موجودہ حکومت اپنے 100روزہ پلان کی کامیابی کے ساتھ احسن انداز میں ٹیک آف کرے گی۔

انہوں نے کہا کہ کئی ایک رکاوٹوں کے باوجود موجودہ حکومت ملک کو صحیح ٹریک پر ڈالنے کیلئے کوشاں ہے جس کیلئے موجودہ ملکی قیادت نیک نیتی کے ساتھ سنجیدہ کوششیں کر رہی ہے۔ سینئر وزیر نے بتایا کہ وزیر اعظم کی طرف سے اصولی منظور ی کے بعد پنجاب کے نئے بلدیاتی نظام کے خدو خال کو حتمی شکل دینے کیلئے وزارت قانون میں تیزی سے کام جاری ہے اوروزیر قانون کی سربراہی میں قائم کردہ کمیٹی اپنی سفارشات تیار کر رہی ہے

انہوں نے بتایا کہ پنجاب کے نئے بلدیاتی سسٹم کیلئے دو یا تین ماڈل تیار کیے جائیں گے جن میں سے ایک کو وزیر اعظم عمران خان کی منظوری کے بعد پنجاب اسمبلی میں بل کی شکل میں پیش کیا جائے گا ،عبدالعلیم خان نے کہا کہ صوبے کے بلدیاتی نمائندے مالیاتی اور انتظامی اعتبار سے با اختیار ہوں گے،میئر کا انتخاب ڈائریکٹ اور جماعتی بنیادوں پر ہوگا جبکہ تحصیل اور سٹی حکومتیں کام کریں گی۔

انہوں نے کہا کہ نواز لیگ نے جان بوجھ کر بلدیاتی اداروں کو کمزور اور بے اختیار رکھا تاکہ نام نہاد خادم اعلیٰ تمام فنڈز خود استعما ل کر سکیں لیکن اب ایسا نہیں ہوگا اور ترقی یافتہ ملکوں کی طرز پر مضبوط بلدیاتی سسٹم متعارف کرائیں گے۔