وزیراعظم عمران خان نے ماجد خان کو رشتے دار ہونے کے باعث پی سی بی میں اہم عہدہ دینے سے انکار کردیا

لاہور (اُردو نیوز) وزیراعظم عمران خان نے ماجد خان کو رشتے دار ہونے کے باعث پی سی بی میں اہم عہدہ دینے سے انکار کردیا، چئیرمین پی سی بی پاکستان کے سابق اور عظیم کرکٹر کو بورڈ کا چیف ایگزیکٹو بنانے کے خواہش مند، تاہم وزیراعظم نے تجویز ماننے سے انکار کردیا۔ تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم پاکستان اور پاکستان کرکٹ بورڈ کے پیٹرن ان چیف نے بورڈ کے نو منتخب چیئرمین احسان مانی کی جانب سے سابق اوپننگ بلے باز ماجد خان کو پی سی بی کا چیف ایگزیکٹو آفیسر بنانے کی تجویز مسترد کردی ہے۔

ماجد خان قومی ٹیم کے سابق کپتان اور وزیر اعظم عمران خان کے کزن ہیں اور دونوں نے ایک عرصے تک ساتھ کرکٹ بھی کھیلی ہے۔ ماہرین کا ماننا ہے کہ ماجد خان چیف ایگزیکٹو آفیسر کے عہدے کے لیے سب سے بہترین اور موزوں ترین شخصیت ہیں لیکن عمران خان اپنے کسی بھی رشتے دار کو عہدہ دینے کے حامی نہیں ہیں۔

احسان مانی نے چیئرمین پی سی بی منتخب ہونے کے بعد اپنی پہلی پریس کانفرنس میں بورڈ کے چیئرمین کی جانب سے چیف ایگزیکٹو کا عہدہ بھی رکھنے پر اپنے تحفظات کا اظہار کیا تھا۔انہوں نے کہا تھا کہ ہمارے بورڈ میں چیئرمین اور چیف ایگزیکٹو دونوں ایک ہیں اور دنیا کے کسی بھی بورڈ میں ایسا نہیں ہے۔

چیئرمین پی سی بی نے وضاحت کرتے ہوئے بتایا تھا کہ چیئرمین کا کام پالیسیوں پر چیف ایگزیکٹو کے ذریعے عمل درآمد کرانا ہے اور چیف ایگزیکٹو بورڈ کی مینجمنٹ کا ذمے دار ہوتا ہے لہٰذا ہم ان دونوں عہدوں کو الگ الگ رکھیں گے۔ احسان مانی کسی اہل اور موزوں شخص کو چیف ایگزیکٹو کا عہدہ دینے کے خواہشمند ہیں۔

ماہرین کرکٹ کی رائے میں اس عہدے کے لیے ماجد خان سب سے مضبوط اور بہترین امیدوار ہیں، کیونکہ وہ ماضی میں بھی یہ ذمے داری خوش اسلوبی سے انجام دے چکے ہیں۔ تاہم وزیراعظم عمران خان اپنے کزن ماجد خان کو یہ عہدہ دینے پر بظاہر راضی نظر نہیں آ رہے۔

یہ ہوتی ہے تبدلی