طیب اردوان کا دورہ پاکستان تاریخی بنانے کا فیصلہ

اسلام آباد (اردو نیوز) ترک صدر طیب اردوان 14 فروری کو پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کریں گے۔تفصیلات کے مطابق ترک صدر 13 اور 14 فروری کو پاکستان کا دورہ کریں گے، جس میں وہ پاکستان کی اعلیٰ سیاسی اور عسکری قیادت سے ملاقات کرینگے۔ اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس 14 فروری کو بلانے کا اعلان کر دیا ہے۔

ترک صدر بھی اجلاس سے خطاب کریں گے۔اسپیکرقومی اسمبلی اسد قیصر نے تمام جماعتوں کے اراکین کو مشترکہ اجلاس میں حاضری یقینی بنانے کی ہدایت کی ہے۔ذرائع کے مطابق ترکی کے صدر رجب طیب اردوان جمعہ 14 فروری کو پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کریں گے۔ جمعرات کو سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے قومی اسمبلی کو بتایا کہ جمعہ 14 فروری کو رجب طیب اردوان پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کریں گے۔

سپیکر قومی اسمبلی نے کہا کہ اس سلسلے میں تمام پارلیمانی جماعتوں کے ساتھ مشاورت کی جائے گی اور قومی اسمبلی سیکرٹریٹ اس حوالے سے انتظامات کا جائزہ لے رہی ہے۔جب کہ دوسری جانب ذرائع کا کہنا ہے کہ پاکستان اور ترکی کی اعلیٰ سطح تذویراتی تعاون کونسل کا اجلاس منعقد کیا جائیگا،جس کی صدارت وزیراعظم پاکستان عمران خان اور ترک صدر مشترکہ طور پر کرینگے، جس میں متعدد معاہدے، تعاون کی یادداشتوں پر دستخط کیے جائینگے اور متعدد منصوبے شروع ہوں گے۔

مزید یہ کہ رجب طیب اردوان کے دورے کے دوران تذویراتی اقتصادی فریم ورک، باہمی تعاون کے تحت معاہدات کا امکان بھی ظاہر کیا جا رہا ہے جبکہ سرمایہ کاری، تجارت، دفاعی پیداوار،بینکنگ، مالیات میں تعاون بڑھانے پر بھی غور کیا جائیگا۔ واضع رہے کہ ترکی کے صدر کا دورہ پاکستان قبل ازیں 3 بار معطل ہوچکا ہے، عمران خان نے جنوری 2019میں ترک صدرکو دورہ پاکستان کی دعوت دی تھی۔

یاد رہے کہ ترک صدر پاکستان کے کشمیر کے موقف کی بھرپور حمایت کرتے ہیں اور انھوں نے پاکستان کے موقف کو کئی بار سراہا ہے۔ اب انکے دودے سے متعلق خبر سامنے آئی ہے کہ وہ 13 اور 14 فروری کا پاکستان کا دورہ کرینگے، جس میں اعلیٰ سیاسی اور عسکری قیادت سے ملاقات کرینگے۔ ایک اجلاس بھی منعقد کیا جائیگا جس کی صدارت عمران خان اور رجب طیب اردوان مشترکہ طور پر کرینگے۔