جج ارشد ملک کی ویڈیو اصلی قرار، مسلم لیگ ن کی بڑی کامیابی

اسلام آباد (اُردو نیوز) پنجاب سائنس فرانزک لیبارٹری نے احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کی ویڈیو سے متعلق اپنی رپورٹ میں وڈیو کو اصل قرار دے دیا جس کے بعد مسلم لیگ ن نے بھی سُکھ کا سانس لیا۔ تفصیلات کے مطابق اب سے کچھ دیر قبل پنجاب سائنس فرانزک لیبارٹری کی جانب سے فرانزک رپورٹ ایف آئی اے کو موصول ہوگئی۔جس میں بتایا گیا کہ ویڈیو کے فرانزک میں تصاویر اور آواز کا تعین بھی کر لیا گیا۔

فرانزک رپورٹ کے مطابق آڈیواور وڈیو کو بھی درست قرار دے دیا گیا ہے۔ جبکہ ایف آئی اے نے جج ارشد ملک کی ویڈیو سے متعلق پنجاب سائنس فرانزک لیبارٹری کی فرانزک رپورٹ کو بھی تفتیش کا حصہ بنا دیا ہے۔ اس سب کے بعد مسلم لیگ ن کو کُھل کر سیاست کا موقع ملنے کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔

سیاسی مبصرین کے مطابق مسلم لیگ ن کو جج ارشد ملک کی ویڈیو منظر عام پر لانے کے لیے توہین عدالت کا مرتکب قرار دیا جا رہا تھا جبکہ یہ بھی امکان ظاہر کیا جا رہا تھا کہ شاید جج کی اس طرح کی خفیہ ویڈیو بنانے اور اسے منظر عام پر لانے کے لیے پریس کانفرنس کرنے والے لیگی رہنماؤں کے خلاف مقدمے بھی بنائے جائیں گے۔

لیکن اب جب کہ جج ارشد ملک کی ویڈیو کو اصل قرار دے دیا گیا ہے تو ایسے میں مسلم لیگ ن کی جانب سے سابق وزیراعظم نواز شریف کی رہائی کا مطالبہ زور پکڑ سکتا ہے۔ اس ضمن میں مسلم لیگ ن نے تاحال کسی حکمت عملی کا اعلان تو نہیں کی البتہ مسلم لیگ ن کی جانب سے اپنے مطالبے کے حق میں ریلیوں کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔ دوسری جانب پنجاب سائنس فرانزک لیبارٹری کی فرانزک رپورٹ کے بعد ججز کی غیر جانبداری پر بھی سوال اُٹھ گئے ہیں۔

سیاسی تجزیہ کاروں کے مطابق فرانزک رپورٹ کے مطابق عدلیہ کو تنقید کا نشانہ بنایا جائے گا جبکہ ممکنہ طور پر اس رپورٹ کے بعد عوام بھی عدلیہ پر عدم اعتماد کا اظہار کر سکتی ہے۔ جبکہ ایسے حالات میں مسلم لیگ ن کے بیانیے کو مزید تقویت ملے گی جس سے انہیں سیاسی طور پر فائدہ ہو گا۔