یہ ہوئی ناں بات : سابق وزیر خزانہ بھی عمران حکومت کو پیارے ہو گئے ، ٹائیگروں کا سر فخر سے بلند کر دینے والی خبر

اسلام آباد ( ویب ڈیسک ) سابق وزیرخزانہ مفتاح اسماعیل نے کہاہے کہ اسد عمر جوکام نوماہ میں نہیں کرسکے ، وہ حفیظ شیخ نے تین ہفتے میں کردکھایا ، ان کو سمجھ نہیں آرہا تھا ،حفیظ شیخ کو کام آتاہے ۔نجی ٹی وی کے پروگرام میں بات چیت کرتے ہوئے مفتاح اسماعیل نے کہا کہ اسد عمر جوکام نوماہ میں نہیں کرسکے ، وہ حفیظ شیخ نے تین ہفتے میں کردکھایا ۔ انہوں نے کہا کہ ان کو سمجھ نہیں آرہا تھا ، حفیظ شیخ کو کام آتاہے اور ان کی جانب سے کام کردکھایا گیا ۔ان کا کہناتھا کہ ن لیگ کے دور حکومت میں ہر سال گروتھ بڑھ رہی تھی ، جب میں چھوڑ کرگیا ، کرنٹ اکاﺅنٹ خسارہ بہت زیادہ تھا ،ہم نے پلان کیا تھا کہ کرنٹ اکاﺅنٹ خسارہ کم کریں گے ، ہم نے نجکاری کی بات کی ، تب تحریک انصاف نے مخالفت کی تھی ، اب یہ سٹیل مل کی نجکاری کررہے ہیں۔

دوسری جانب وزیر مملکت برائے پارلیمانی امور علی محمد خان نے کہا ہے کہ حکومت آئی ایم ایف کے پاس مجبوری میں گئی، دعا ہے کہ آئی ایم ایف کے ساتھ یہ آخری پروگرام ہو۔ تفصیلات کے مطابق وزیر مملکت برائے پارلیمانی امور علی محمد خان نے اے آر وائی نیوز کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ آئی ایم ایف کے پاس جانے پر کوئی بھی خوش نہیں ہوگا،ماضی کی حکومتوں کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے آئی ایم ایف جانا پڑا۔انہوں نے کہا کہ سوال یہ ہے کہ آئی ایم ایف پروگرام کے بعد معیشت کو کیوں بہتر نہ کرسکے، آئی ایم ایف کے پاس دوبارہ جانا پڑا تو میں سمجھتا ہوں ہم ناکام ہوگئے۔علی محمد خان نے کہا کہ آئی ایم ایف جانے سے مہنگائی ختم نہیں ہوگی،انہوں نے کہا کہ اسٹیل مل خسارے میں ہے، پی آئی اے، ریلوے، پاکستان پوسٹ تباہ ہوگئے۔