بھارتی انتخابات سے ایک روز قبل عرب ممالک نے پاکستان کو دھوکہ دیدیا،نریندر مودی کو سرپرائز دیتے ہوئے بڑی خوشخبری سنادی گئی

نئی دہلی (نیو ز ڈیسک)نریندرا مودی کو دوبارہ وزیراعظم بنانے کے لیے عرب ممالک بھی متحرک ہو گئے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق نریندرا مودی کو دوبارہ وزیراعظم بنوانے کے لیے کچھ بڑی طاقتوں کے علاوہ عرب ممالک بھی اندرون خانہ متحرک ہو گئے ہیں۔ اس حوالے سے قومی اخبار میں شائع ایک رپورٹ میں بتایا گیا کہ ماہرین کا کہنا ہے کہ امریکہ اور اسرائیل کے بھی مودی سے تعلقات ہیں۔اور پاکستان پر حملہ ہوسکتا ہے۔ اس حوالے سے پروفیسر جانسن ٹام بریسڈ کا کہنا ہے کہ پاکستان کی گذشتہ دس سالوں پر محیط حکومتوں نے خلیجی ممالک کو بالکل نظرانداز کر دیا تھا جس کا خلاء بھارتی حکمرانوں نے پُر کیا۔ امریکہ اور اسرائیل سمیت عرب ممالک کے ساتھ مودی نے معاشی اور ذاتی تعلقات استوار کیے۔

انہوں نے کہا کہ کئی عرب ممالک سی پیک کی وجہ سے پاکستان سے ناخوش ہیں۔ان کو خدشہ ہے کہ اگر گوادر پورٹ نے باضابطہ کام کا آغاز کر دیا اور اس علاقہ میں جاری ترقیاتی کام مکمل ہو گئے تو سب سے زیادہ وہ ممالک متاثر ہو سکتے ہیں۔ افغانستان اور ایران بھی پاک چین اقتصادی راہداری کے خلاف ہے ۔ پروفیسر مائیکل جے رائٹ نے کہا کہ بھارت کے الیکشن پر سب کی نظریں ہیں۔ پاکستانی وزیرخارجہ نے بھارت کی جانب سے حملے کے خدشے کا اظہار کیا ، اب امریکہ کو اس کا نوٹس لینا چاہیئے ۔وائٹ ہاؤس کی جانب سے پاکستان کو نظرانداز کرنا مستقبل میں مزید پیچیدگیاں پیدا کر سکتا ہے ۔ اس وقت پاکستان میں ایک کھلاڑی حکمران ہے اور اس کے ساتھ ملٹری اسٹیبلشمنٹ تعاون کر رہی ہے۔

امریکہ کو پاکستان اور بھارت کے ساتھ بیلنس تعلقات قائم کرنا ہوں گے ۔ ڈاکٹر امرجیت سنگھ کا کہنا تھا کہ ہو سکتا ہے کہ بھارت 16 اور 20 اپریل کی بجائے کچھ تاخیر سے پاکستان پر حملہ کر دے کیونکہ نریندر مودی سے خیر کی توقع نہیں کی جا سکتی ۔ پروفیسر اجے کمار شرما نے کہا کہ بھارتی ملٹری اسٹیبلشمنٹ اور خفیہ ایجنسیاں مودی کے ساتھ ہر ممکن تعاون کر رہی ہیں اور وہ ہر صورت مودی کو دوسری ٹرم کے لیے لانا چاہتی ہیں ، اس کے لیے کمپیوٹرائزڈ ووٹر مشینوں کے ذریعے دھاندلی کی منصوبہ بندی بھی کی جا رہی ہے۔