ایسی کیا وجہ بنی کہ ترکی نے پاکستان ایئر فورس کو مدد کیلئے بلا لیا، پوری دنیا میں ہلچل مچ گئی

انقرہ (نیوز ڈیسک ) پاکستانی افواج کا شمار خطے کی قابل ترین افواج میں ہوتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ تُرکی نے اپنی فضائیہ کی تربیت کے لیے پاکستان سے مدد طلب کر لی ہے۔ تفصیلات کے مطابق امریکی جریدے کی رپورٹ میں انکشاف کیا گیا کہ ترکی نے اپنی فضائیہ کی تربیت کے لیے پاکستان سے مدد طلب کر لی ہے۔ امریکی انکار کے بعد انقرہ نے پاکستان سے

مدد طلب کی کیونکہ پاکستانی فضائیہ بھی ایف 16 طیارے استعمال کرتی ہے ، ناکام فوجی بغاوت کے بعد اردگان حکومت نے ایف 16 جنگی طیاروں کے 300 ماہر ہوا باز ملازمت سے فارغ کر دئے تھے جس سے طیب اردگان نے ترک فضائیہ کمزور کر دی ۔امریکی جریدے”نیشنل انٹرسٹ“میں شائع کی گئی ایک رپورٹ میں بتایا گیا کہ ترکی میں ناکام فوجی بغاوت کے بعد حکومت نے ایف 16 جنگی طیاروں کے 300 ماہر ہوا باز ملازمت سے فارغ کیے تھے ، اتنی بڑی تعداد میں ہوابازوں کی ملازمت سے برطرفی نے ترک فضائیہ میں ‘قحط الرجال’

پیدا کردیا ہے۔رپورٹ کے مطابق 16 جولائی 2016ء کے بعد حکومت نے مخالفین کے خلاف کریک ڈاؤن شروع کیا جس کے نتیجے میں ہزاروں ترک شہریوں، فوجیوں، صحافیوں یہاں تک کہ فضائیہ کے پائلٹس اور دیگر عہدیداروں کو بھی پابند سلاسل کردیا گیا۔اس دوران ترک صدر نے کم سے کم 300 ایسے ہوابازوں کو ملازمت سے فارغ کر دیا جو ایف 16 طیاروں کے ماہر اور تربیت یافتہ ہواباز تھے۔ جریدے کی رپورٹ میں بتایا گیا کہ صدرطیب اردگان نے فوج میں اپنے مخالفین کو ملازمت سے فارغ کیا اور ہر اس شخص کو

ملازمت سے نکال دیا گیا جو کسی بھی طرح حکومت کے لیے خطرہ بن سکتے تھے۔ اس تطہیری عمل میں طیب اردگان اپنی فضائیہ کو تین سو ماہر ہوا بازوں سے محروم کر بیٹھے حالانکہ ایک پائلٹ کی تربیت مکمل کرنے پر کم سے کم نصف ملین ڈالر کا خرچ آتا ہے۔فضائیہ میں تربیت یافتہ افراد کی کمی دور کرنے اور نئے ہوابازوں کی تربیت کے لیے ترک صدر نے امریکہ سے مدد طلب کی تھی لیکن دونوں ملکوں کے مابین جاری کشیدگی کے باعث امریکہ نے اپنا عملہ ترکی بھیجنے سے انکار کردیا جس کے بعد اب ترکی نے پاکستان سے مدد طلب کر لی ہے۔ جس کی وجہ یہ ہے کہ پاکستانی فوج بھی ایف 16 طیارے استعمال کرتی ہے۔ پاکستان کی جانب سے تربیتی عملہ ترکی بھیجے جانے کے معاملے پر تاحال کوئی اطلاع موصول نہیں ہوئی