جیالوں پر احتساب کا خوف طاری ، پیپلز پارٹی نے فوجی عدالتوں کی مدت میں توسیع کی مخالفت کا اعلان کردیا ، یوسف رضا گیلانی کی میڈیا کو بریفنگ

پاکستان پیپلزپارٹی نے فوجی عدالتوں کی مدت میں توسیع کی مخالفت کا اعلان کردیا ۔ ایک نجی ٹی وی کے مطابق سابق صدر آصف زرداری اور پیپلز پارٹی کے چیرمین بلاول بھٹو زرداری کی زیر صدارت اجلاس کے بعد سابق وزیر اعظم سید یوسف رضا گیلانی نے میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ پیپلز پارٹی فوجی عدالتوں کی توسیع کی مخالف کرے گی ، ہم 18 ویں ترمیم پر کوئی سمجھوتہ نہیں کریں گے ، 18 ویں ترمیم پر ہم نے تمام پارٹیوں سے مشورے لیے تھے ، چھوٹے صوبوں میں احساس محرومی تھا ہم نے اسے ختم کیا ، تمام اراکین نے مل کر 73 کے آئین کو بحال کیا ، ہمارا مصمم ارادہ ہے کہ 18 ویں ترمیم کا دفاع کریں گے ۔

18 ویں ترمیم کے خلاف وفاقی حکومت کچھ ادارے واپس لے رہی ہے ، وفاقی حکومت کے اداروں کو واپس لینے کی مذمت کرتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ جنوبی پنجاب کو محدود اختیارات کی خیرات نہیں بلکہ مکمل صوبہ چاہیے ، پیپلز پارٹی نے ہمیشہ عدالتوں کا سامنا کیا اور باعزت بری ہوئے ، نئے چیف جسٹس سے امید ہے کہ بھٹو صاحب کا کیس حل کریں گے ۔ یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ انسانی حقوق پرعمل کیلیے پارلیمنٹ میں آواز اٹھائیں گے ، پاکستان پیپلزپارٹی اصولوں کی سیاست کرتی ہے ، کسی دباؤ میں نہیں آتی ، جو کچھ قومی مفاد میں ہوگا وہی کریں گے ، اس موقع پر پیپلز پارٹی کے ترجمان فرحت اللہ بابر نے کہا کہ فوری طور پر جنوبی پنجاب کا صوبہ بنایا جائے ۔

اجلاس میں سابق وزرائے اعظم سید یوسف رضا گیلانی ، راجہ پرویز اشرف ، فریال تالپور ، رضا ربانی ، بیرسٹر اعتزاز احسن ، سید خورشید شاہ ، قمر زمان کائرہ ، سینیٹر شیری رحمن ، فرحت اللہ بابر ، سید نوید قمر ، فاروق ایچ نائک ، وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ ، نثار کھوڑو ، ہمایوں خان ، چودھری منظور، فیصل کریم کنڈی ، سعید غنی ، مرتضیٰ وہاب ، ڈاکٹر نفیسہ شاہ ، فیصل راٹھور، ناصر حسین شاہ ، سربلند جوگیزئی ، اعجاز جکھرانی ، شیراز راجپر سمیت پیپلز پارٹی کی اعلیٰ قیادت بھی موجود تھی ۔