لاہور ایئرپورٹ پر شراب فروخت کرنے کی اجازت دینے کا معاملہ ، میڈیا کا شرمناک کردار سامنے آگیا ، ترجمان پنجاب حکومت نے حقیقت کھول کر رکھ دی

گزشتہ ایک دو روز سے یہ خبریں چل رہی ہیں کہ علامہ اقبال انٹرنیشنل ائیرپورٹ لاہور پر شراب اور بیئر فروخت کرنے کی اجازت دیدی گئی ہے جس کے باعث سوشل میڈیا پر ایک طوفان برپا ہے تاہم اب پنجاب حکومت کے ترجمان شہباز گل نے وضاحت کرتے ہوئے ان خبروں کی تردید کر دی ہے ۔ تفصیلات کے مطابق سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر جاری اپنے ویڈیو میں شہباز گل نے کہا کہ کچھ نجی ٹی وی چینلز پر خبر چلی ہے کہ لاہور ائیر پورٹ پر شراب اور بیئر دستیاب ہو گی اور یہ کہا گیا ہے کہ پنجاب حکومت نے اس کی اجازت دیدی ہے ۔

تاہم یہ خبر غلط اور غلط حقائق پر مبنی ہے ۔ حقیقت یہ ہے کہ لاہور ائیرپورٹ کے قریب ایک فور یا فائیو سٹار ہوٹل زیر تعمیر ہے جو مارچ تک تکمیل کو پہنچ جائے گا ۔ پاکستان میں اس سے پہلے جتنے بھی فور اور فائیو سٹارز ہوٹل پہلے سے موجود ہیں اور انہیں جس طرح کی اجازتیں ہیں بالکل ویسی ہی اجازت اس ہوٹل کے پاس بھی ہے اور کسی بھی طرح کی ایسی خاص اجازت نہیں دی گئی جو دوسرے فائیو سٹار ہوٹل کے پاس نہیں ہے اور جو خبریں چل رہی ہیں وہ اس ہوٹل سے متعلق ہیں بلکہ ائیرپورٹ سے متعلق نہیں ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ یہ ہوٹل ائیرپورٹ کے اوپر نہیں بلکہ اس کی جانب یا قریب ہے اور پاکستان میں جتنے بھی فور سٹارز اور فائیو سٹارز ہوٹلز ہیں ان کے پاس پہلے سے ہی اس کی اجازت ہیں اور وہاں ٹھہرنے والے غیر ملکی اور غیر مسلم افراد کے استعمال کیلئے موجود الکوحل کا بھی باقاعدہ قانون ہے ، لہٰذا پنجاب حکومت نے اس کے علاوہ کوئی اجازت نہیں دی ۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ اگر آپ غور کریں تو ملک میں جتنے بھی ائیرپورٹس ہیں وہ سول ایوی ایشن اتھارٹی کے ماتحت آتے ہیں نا کہ پنجاب حکومت کے ، اس لئے پنجاب حکومت وہاں کچھ کر ہی نہیں سکتی ۔