مولانا سمیع الحق قتل کیس میں مولانا کے قریبی ترین ساتھی گرفتار،کیس کا رخ ہی تبدیل ہو گیا۔۔ دھماکہ خیز خبر آگئی

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)مولانا سمیع الحق قتل کیس میں مولانا کے قریبی ترین ساتھی گرفتار،کیس کا رخ ہی تبدیل ہو گیا۔۔ دھماکہ خیز خبر آگئی ۔۔مولانا سمیع الحق کیس میں بڑی پیش رفت سامنے آ گئی ،پولیس نے مولانا سمیع الحق کے پرسنل سیکرٹری ارشاد شاہ کو گرفتار کرلیا۔تفصیلات کے مطابق 2 نومبر کو معروف عالم دین، مذہبی اسکالر اور جمعیت علماء اسلام (س) کے سربراہ مولانا سمیع الحق پرراولپنڈی میں قاتلانہ حملہ ہوا تھا۔ پولیس کی ابتدائی رپورٹ کے مطابق مولانا سمیع الحق پر چاقوؤں سے حملہ کیا گیا ، بعد ازاں ملازم کی جانب سے پولیس کوحملے کی اطلاع دی گئی۔ حملے کے وقت گھر میں کوئی موجود نہیں تھا، بلکہ مولانا سمیع الحق اکیلے ہی گھر میں موجود تھے۔

ملازم کا کہنا تھا کہ میں باہر گیا تھا، جونہی میں گھر واپس آیا تو مولانا سمیع الحق خون میں لت پت تھے۔ ان کو اسپتال لے جایا گیا تووہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے شہید ہوگئے۔ بتایا گیا کہ مولانا سمیع الحق پر تھانہ ایئرپورٹ راولپنڈی کے علاقے میں واقعہ ہاؤسنگ سوسائٹی میں حملہ کیا گیا۔ مولانا سمیع الحق کے سینے پر چاقوؤں سے وار کیے گئے۔ ان کو اسپتال لے جایا گیا لیکن وہ جانبر نہ ہوسکے اورشہید ہوگئے۔ مولانا سمیع الحق کی شہادت کے بعد قانون نافذ کرنے والے ادارے قاتلوں کو پکڑنے کی کوششوں میں مسلسل مصروف تھے۔

اور اب دعویٰ کیا جا رہا ہے کہ اس سلسلے میں بڑی کامیابی حاصل کر لی گئی ہے۔اس حوالے سے تازہ ترین خبر یہ ہے کہ پولیس نے مولانا سمیع الحق کے پرسنل سیکرٹری ارشاد شاہ کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔ مولانا سمیع الحق کے خاندانی ذرائع کا کہنا ہے کہ ارشاد شاہ 3 ہفتے سے سیکیورٹی اداروں کے پاس تھے جن کو اب باضابطہ طور پر گرفتار کر لیا گیا ہے۔واضح ہو کہ اس سے پہلے بھی 6 گرفتاریاں کی جا چکی ہیں تاہم ابھی تک اس کیس کو منطقی انجام تک نہیں پہنچایا جاسکا۔