چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال نے تمام نیب افسران پر میڈیا کو انٹرویو دینے پر مکمل پابندی عائد کردی

قومی احتساب بیورو کے چیئرمین جسٹس (ر) جاوید اقبال نے نیب کے تمام ڈائریکٹر جنرلز ، ڈائریکٹرز اور دیگر افسران پر میڈیا ( پرنٹ اینڈ الیکٹرانک ) کو انٹرویو دینے پر مکمل پابندی عائد کردی ہے ۔ تفصیلا ت کے مطابق چیئرمین نیب جسٹس ( ر) جاوید اقبال نے کہا ہے کہ وہ تمام معزز اراکین اسمبلی کا احترام کرتے ہیں ، ڈی جی نیب لاہور کے میڈیا کو دیے گئے انٹرویوز کا ریکارڈ پیمرا سے طلب کر لیا ہے جس کا قانون کے مطابق جائزہ لیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ میڈیا جاری تحقیقات / انویسٹی گیشنز کے بارے میں قیاس آرائیوں سے گریز کرے ۔

اگر میڈیا کو کسی ریفرنس یا مقدمہ کے بارے میں معلومات درکار ہوں گی تو نیب کے ترجمان قومی احتساب بیورو کا موقف دینے کے مجاز ہوں گے ۔ واضح رہے کہ چیئر مین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال کو آج نیب لاہور میگا کرپشن کے مقدمات پر تفصیلی بریفنگ دی گئی جو کل بھی جاری رہے گا ۔ نیب ملک سے بد عنوانی کے خاتمہ اور میگا کرپشن کے مقد مات کو منطقی انجام تک پہنچانے کونہ صرف اپنی اولین ترجیح قرار دیتا ہے بلکہ اس کے لیے بلا امتیاز قانون کے مطابق بدعنوان عناصر کے خلاف نیب سنجیدہ کاوشیں کر رہا ہے تاکہ ان سے قوم کی لوٹی گئی رقم برآمد کرکے قومی خزانے میں جمع کروائی جائے ۔