لوگوں کی املاک کو نقصان پہنچانا مہنگا پڑ گیا ۔۔ تحریک انصاف نے ایسا اقدام اٹھا لیا کہ آئندہ کوئی بھی ایسا کام کرنے سے پہلے ہزار بار سوچے گا

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) حکومت نے دوران احتجاج املاک کونقصان پہنچانے والوں کیخلاف کاروائی کا فیصلہ کرلیا ہے،حکومت نے محکموں سے توڑ پھوڑ کرنے والوں کی نشاندہی کیلئے معاونت مانگ لی ہے، شرپسندعناصر کی نشاندہی کرکے انہیں کٹہرے میں لائیں گے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق حکومت نے مذہبی جماعتوں کے احتجاج کے دوران محکموں سے توڑ پھوڑ کرنے والوں کی نشاندہی کیلئے معاونت مانگ لی۔ وفاقی وزیرمواصلات مراد سعید کا کہنا ہے کہ شرپسندعناصر کی نشاندہی کرکے انہیں کٹہرے میں لائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ آئین پاکستان پرامن احتجاج کی اجازت دیتا ہے۔ شرپسند عناصر کی جانب سے گزشتہ روز نیشنل ہائی ویز کی املاک کونقصان پہنچایا گیا۔احتجاج کی آڑ میں املاک کونقصان پہنچانے کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔ مراد سعید نے کہا کہ احتجاجی قیادت کا شرپسند عناصر سے اعلان لاتعلقی خوش آئند ہے۔ مزید برآں لاہور پولیس نے ایک مذہبی تنظیم تحریک لبیک کے سربراہ خادم حسین رضوی، پیر افضل قادری، ظہیر الحسن اور علامہ فاروق الحسن سمیت چار سو مظاہرین کے خلاف مختلف سنگین دفعات کے تحت مقدمہ درج کر لیا ہے۔ تھانہ سول لائنز نے لاہور پولیس کی مدعیت میں درج کئے جانے والے مقدمے کی ایف آئی آر سیل کر دی گئی ہے۔

بتایا گیا ہے کہ تحریک لبیک کے رہنمائوں اور کارکنوں کے خلاف درج کئے جانے والے مقدمہ میں دہشت گردی، پاکستان اور افواج پاکستان کے خلاف بغاوت کرنے، عوام میں نفرت انگیز تقاریر کرنے، 16 ایم پی او اور دفعہ 144 سمیت دیگر دفعات شامل کی گئی ہیں۔ واضح رہے آسیہ ملعونہ کی رہائی کیخلاف مذہبی جماعتوں سمیت ملک بھر میں لوگوں نے شدید احتجاج کیا۔ لیکن احتجاج میں شامل بعض شرپسند عناصر نے توڑ پھوڑ سے قومی املاک کو نقصان پہنچایا اور موٹروے سمیت دیگر مقامات پر عام شہریوں کی متعدد گاڑیوں اور موٹرسائیکلوں کو آگ بھی لگا دی۔ جس پر لوگوں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ ان کے نقصان کا ازالہ کیا جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں