چیف جسٹس آف پاکستان ثاقب نثار کی کارکردگی سے کتنے فیصد پاکستانی مطمئن ہیں؟ سروےکے حیرانکن نتائج ۔۔کتنے فیصد عوام چیف جسٹس کی حمایتی نکلی

اسلام آباد (مانٹرینگ ڈیسک) : سپریم کورٹ کے جج جسٹس میاں ثاقب نثار کو 7 دسمبر 2016ء کو چیف جسٹس آف پاکستان مقرر کیا گیا جس کے بعد انہوں نے 31 دسمبر 2016ء کو چیف جسٹس کے عہدے کا حلف اُٹھایا اور اپنی ذمہ داریاں سنبھالیں۔ میاں ثاقب نثار نے اب تک کئی از خود نوٹس لیے اور اپنی کارکردگی کی وجہ سے ہی عوام میں مقبولیت حاصل کی۔

تاہم ان کی کارکردگی کے حوالے سے ایک سروے کروایا گیا جس میں 57 فیصد پاکستانیوں نے چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار کی کارکردگی پر اظہار اطمینان کیا۔ گیلانی ریسرچ فاؤنڈیشن کے مطابق یہ سروے گیلپ اور گیلانی پاکستان نے منعقد کروایا۔ اس سروے میں 57 فیصد پاکستانیوں نے کہا کہ ہم گذشتہ ایک سال میں چیف جسٹس ثاقب نثار کی کارکردگی پر مطمئن ہیں ۔

ملک کے چاروں صوبوں میں سے مقامی خواتین اور مرد حضرات سے سوال کیا گیا کہ گذشتہ ایک برس میں انہیں چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار کی کارکردگی کیسی لگی ؟ کیا آپ چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار کی کارکردگی سے مطمئن ہیں؟ اس سوال کے جواب میں 32 فیصد افراد نے کہا کہ چیف جسٹس احسن طریقے سے اپنی ذمہ داریاں سر انجام دے رہیں اور ان کی کارکردگی بہت اچھی ہے۔

25 فیصد افراد کا کہنا تھا کہ چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار کی کارکردگی اچھی ہے۔ 11 فیصد افراد نے کہا کہ چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار کی کارکردگی مناسب ہے۔ 14 فیصد افراد نے کہا کہ چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار کی کارکردگی بُری ہے۔ 13 فیصد افراد نے کہا کہ چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار کی کارکردگی بہت بُری ہے جبکہ 5 فیصد عوام نے یا تو اس سوال کا جواب نہیں دیا یا انہیں اس حوالے سے کچھ علم نہیں تھا۔

واضح رہے کہ چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار کا کہنا ہے کہ میرا مشن اس ملک میں انصاف کا قیام اور ڈیمز بنانا ہے۔ یاد رہے کہ چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے ہی سب سے پہلے ڈیم فنڈ کا قیام کیا جسے بعد میں وزیراعظم ڈیم فنڈ کے ساتھ ملا کر اس کا نام وزیراعظم چیف جسٹس ڈیم فنڈ رکھ دیا گیا۔