عمران خان کے وژن کو اسد عمر نے دفن کر دیا،وزیر خزانہ وزیراعظم کیخلا ف کیا سازش کر رہے ہیں؟ مبشر لقمان پھٹ پڑے

لاہور (ویب ڈیسک )نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے مبشر لقمان کا کہناتھا کہ وزیراعظم عمران خان کا جو بھی ویژن تھا اسے آج اسد عمرنے دفن کر دیاہے ، عمران خان کہتے تھے کہ ہم ٹیکس اکھٹا کریں گے اور سب کو ٹیکس نیٹ میں لے کر آئیں گے لیکن، حکومت نے منی بجٹ میں نافائلز کو گاڑیاں اور جائیدادیں خریدنے کی اجازت دیدی ہے یعنی جو ٹیکس ادا کر رہے ہیں ان پر ٹیکس کا مزید بوجھ ڈال دیا گیاہے اور جو ٹیکس نہیں دیتے انہیں کھلی چھوٹ دیدی گئی ہے ۔

مبشر لقمان کا کہناتھاکہ لینڈ مافیا کو خوش کر دیا گیا اور آٹو موبائل مافیا کو مزید مضبوط کر دیا گیا اور ثابت کر دیا گیا کہ اسد عمر نے لینڈ مافیا اور آٹو مافیا کے ہاتھوں مجبور ہو کر تمام تر ٹیکس ،ٹیکس دینے والوں پر ڈال دیا۔مبشر لقمان کا کہناتھا کہ عمران خان نے میرے پروگرام میں الیکشن سے پہلے ہی کہہ دیا تھا کہ اسد عمر وزیر خزانہ ہو ں گے کہیں عمران خان کے ساتھ دھوکہ دہی تو نہیں ہوئی کہ جس شخص پر انہوں نے اندھا دھن اعتماد کیا اور وہی شخص اسحاق ڈار کے نقش قدم پر چل پڑا ہو ، کہیں ایسا تو نہیں کہ دو تین سال کے بعد اسد عمر ملک کا مزید بیڑہ غرق کر کے لندن بھاگ جائیں اور عمران خان یہاں کسی دلدل میں پھنس جائیں، اللہ کرے ایسا نہ ہو ۔

اینکر پرسن مبشر لقمان کا کہناتھا کہ اسد عمر نے امپورٹ کی جانے والی گاڑیوں پر ٹیکس لگایا اور، بہت اچھا کیا لیکن اسد عمر کی آنکھوں میں اس وقت کیا پڑا ہو اتھا جب وہ بھول گئے کہ نو بلین روپے سالانہ لوکل انڈسٹری والے لوگوں سے اون لیتے ہیں ، وہ لوگوں کا خون چوس رہے ہیں ، اسد عمر نے ’پان پراگ‘ پر پانچ سو گنا ٹیکس کیوں نہیں لگا سکے جو کہ انڈیا سے امپورٹ ہوتی ہے ،کولگیٹ صابن کیوں نہیں بند کر سکے جو کہ انڈیا سے امپورٹ ہو رہے ہیں ؟ایسی چیزوں پر ٹیکس لگے جس کا فائدہ نان فائلرز کو نہ ہو۔انکم ٹیکس یہ ہے کہ آپ نے کمایا اور آپ اس پر ٹیکس دیتے ہیں ، ایک شخص کماتا ہی نہیں تو وہ ٹیکس نہیں دے گا ۔

،لیکن اگر وہ کمائی ہی نہیں کر رہا تو جائیداد کہاں سے خریدرہاہے اور گاڑیاں کہاں سے خرید رہاہے اگر وہ ٹیکس فائلر ہی نہیں ہے ۔ جبکہ دوسری جانب بجٹ ترامیم اور گیس کی قیمتیں بڑھانے پر معروف تجزیہ کار حسن نثار نے وزیر خزانہ اسد عمر کو کھری کھری سنا دیں۔ حسن نثار کا کہنا تھا کہ مجھے لگتا تھا کہ پاکستان تحریک انصاف کی تخلیقی حکومت کرے گی لیکن جیسے گھسے پٹے فیصلے یہ کر رہے ہیں۔ ایسا تو کوئی ریڑھی بان بھی کرسکتا ہے۔ تفصیلات کے مطابق حکومت نے 2 روز قبل گیس کی قیمتوں میں اضافے کا اعلان کیا تھا ۔

جس کے بعد اپوزیشن نے بھی گیس کی قیمتیں بڑھنے پر خاصی تشویش ظاہر کی تھی جبکہ عوام بھی حکومت کے اس فیصلے سے مطمئن نظر نہیں آتے۔ اس موقع پر تحریک انصاف کی حمایت کرنے والے تجزیہ کار اور صحافی بھی ان پر پھٹ پڑے ہیں۔ اس حوالے سےبات کرتے ہوئے معروف تجزیہ کارحسن نثار کا کہنا تھاکہ مجھے لگتا تھا کہ تحریک انصاف کی حکومت تخلیقی صلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوے تخیلقی طریقہ حکومت اختیار کرے گی لیکن ابھی تک جو فیصلے سامنے آئے ہیں ان سے شدید مایوسی ہوئی ہے کیونکہ اس طرح کے فیصلے تو کوئی نیم خواندہ شخص بھی کر سکتا ہے۔

انکا کہنا تھا کہ مجھے اسد عمر سے امید تھی کہ وہ کوئی ایسی باتیں کرے گا جسے سن کر لوگ دنگ رہ جائیں گے اور سوچیں گے کہ اس بندے نے یہ بات کیسے کی ،یہ بات کہاں سے نکال لایا،مگر معذرت کے ساتھ اسد عمر بھی روایتی حرکتوں پر اتر آئے ہیں۔انکا کہنا تھا کہ گیس کے معاملے پر اسد عمر نے اتنی لمبی تقریر کی حالانکہ اس میں کوئی معیشت کا عمل دخل نہیں ہے۔