آپ کی جمع کروائی جانے والی رقم ڈیم فنڈ میں جا بھی رہی ہے یا نہیں؟ نجی بنک سے ایسی خبر آگئی کہ آپ بھی تشویش میں مبتلا ہو جائیں گے

لاہور (ویب ڈیسک) وزیراعظم عمران خان نے پاکستانی عوام سے خاص طور پر اوورسیز پاکستونیوں کو گزشتہ ہفتے ڈیم فنڈ کیلئے رقم جمع کروانے کی اپیل کی تھی، جس کے بعد اوورسیز پاکستانیوں نے ڈیم فنڈ میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا اور اب تک اوورسیز پاکستانیوں کی جانب سے 3 ارب 20 لاکھ روپے ڈیم کیلئے جمع ہو چکے ہیں.

تفصیلات کے مطابق لاہور میں ایک پرائیویٹ بنک کا ملازم ڈیم فنڈ کے پیسے ڈیم اکاؤنٹ سے کسی اور نامعلوم اکاؤنٹ میں ٹرانسفر کرتا ہوا پکڑا گیا ہے. ڈیم فنڈ کیلئے جمع کروانے والے ایک شہری کا کہنا ہے کہ “میں نے رقم جمع کروانے کیلئے ڈیپوسٹ فل کیا، اس وقت ڈیوٹی پر موجود کیشئیر نے سٹیمپ لگائی اور کہا کہ پیسے جمع ہو گئے ہیں، میں نے سوال کیا کہ مجھے کیسے پتہ چلے گا کہ رقم ڈیم کیلئے ہی جمع ہوئی ہے؟

جس پر مجھے جواب ملا کہ اس سے زیادہ میں آپکی مدد نہیں کرسکتا. میں اپنے دوست کے ساتھ ایک اور بنک گیا اور وہاں بھی ڈیم فنڈ کیلئے رقم جمع کروائی مگر مجھے وہاں رقم جمع کروانے کے بعد باقائدہ رسید دی گئی، جس میں بنک اکاؤنٹ نمبر لکھا تھا، وہاں موجود کیشئیر نے مجھے بتایا کہ ہر جگہ یہی طریقہ کار اپنایا جاتا ہے.

جس کے بعد میں دوبارہ پہلے والے بنک گیا اور پتہ کیا کہ کیا میرے پیسے صحیح اکاؤنٹ میں پہنچھ بھی ہیں یا نہیں مینجر سے اس حوالے سے پوچھا جس پر پتہ چلا کہ پیسے ڈیم فنڈ اکاؤنٹ میں نہیں جمع ہوئے، مینجر نے بہانا بنایا کہ غلطی سے کسی اور بنک میں پیسے چلے گئے ہیں ہم کوشش کررہے ہیں کہ پیسے واپس ڈیم فنڈ میں ٹرانسفر کیے جاسکیں.

نجی اخبار کے مطابق اس کے بعد مینجر نے کافی دن فون نہیں اٹھایا اور جب شہری کو بنک بلایا گیا تو مینجر نے ملازم کو بچانے کی کوشش کی جبکہ کیشئیر کے غلط دستخط بھی پکڑے گئے. انھوں نے اسے لاپرواہی قرار دیا.