عمران خان نے پہلے دن ہی مجھے کہہ دیا تھا کہ تم بہت۔۔۔۔زر تا ج گل نے ایسی حقیقت بتا دی کہ یقین کر نا مشکل

کراچی(نیوز ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی نومنتخب رکن قومی اسمبلی زرتاج گل وزیر کا کہنا ہے کہ وہ سسٹم تبدیل کرنے کے لیے قبائلی علاقے سے باہر نکل کر آئی ہیں اور بتانا چاہتی ہیں کہ خواتین بھی مرد لیڈر کی طرح کام کر سکتی ہیں۔واضح رہے کہ زرتاج گل 25 جولائی کو ہونے والے الیکشن میں قومی اسمبلی کی نشست این اے 191 (ڈیرہ غازی خان) سے مسلم لیگ (ن) کے صفدر اویس خان لغاری کے مقابلے میں 25 ہزار زیادہ ووٹ لے کر فاتح قرار پائیں، جنہیں بہت سراہا جارہا ہے۔جیو نیوز کے مارننگ شو ‘جیو پاکستان’ میں گفتگو کرتے ہوئے زرتاج گل وزیر نے کہا کہ ‘میں منافق اور بزدل نہیں بلکہ پاکستان کو تبدیل کرنے میں حصہ ڈالوں گی۔34 سالہ زرتاج گل کے والدین کا تعلق شمالی وزیرستان سے ہے، انہوں نے اپنی تعلیم لاہور سے حاصل کی اور پھر تحریک انصاف میں بطور رضاکار شمولیت اختیار کی۔

انٹرویو کے دوران ان کا کہنا تھا کہ قبائلی ہونے کی وجہ سے ان کی طبعیت جنگجوانہ ہے اور آدھے سے زیادہ ووٹ انہیں تقریر کی وجہ سے ملتے ہیں۔زرتاج گل نے بتایا کہ وزیرستان اور جنوبی پنجاب پسماندگی کا شکار ہیں جبکہ فاٹا کے لوگ سرحدوں کی حفاظت کرتے ہیں لیکن ان کی خدمات کو تسلیم نہیں کیا جاتا۔سیاست میں انٹری کے حوالے سے زرتاج گل کا کہنا تھا کہ ‘میں بتانا چاہتی تھی کہ خواتین بھی مرد لیڈر کی طرح کام کر سکتی ہیں۔زرتاج گل کے مطابق، ‘عمران خان نے مجھے پہلے دن ہی کہا کہ میں بہت بہادر ہوں اور آگے جاسکتی ہوں۔انہوں نے بتایا، ‘لوگ مجھے کہتے ہیں دھی رانی آگئی ہے اور میرا جذبہ دیکھ کر لوگ اپنی بیٹیوں کے نام زرتاج گل وزیر رکھتے ہیں۔پی ٹی آئی چیئرمین کے حوالے سے زرتاج گل نے بتایا کہ ‘عمران خان کے ناقدین انہیں نہیں جانتے، میں شروع دن سے انہیں بطور لیڈر جانتی ہوں، وہ ایک انتہائی سادہ اور دور اندیش لیڈر ہیں’۔