مجھے طلاق دلوائی گئی کیونکہ میرا تعلق دیوبندی مسلک سے تھا جبکہ پی ٹی آئی لیڈر شپ کس مسلک سے تعلق رکھتی ہے؟ ریحام خان نے ایک اور تنازعہ کھڑا کر دیا

لاہور(نیوزڈیسک) ریحام خان نے اپنی کتاب میں الزام عائد کیا ہے کہ پی ٹی آئی کی شعیہ لیڈر شپ نے مجھے طلاق دلوائی کیونکہ میرا پس منظر سنی دیو بندی تھا،،عمران خان کو شعیہ فنڈنگ بھی ہوتی ہے۔تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے چئیرمین عمران خان کے قریبی دوست حمزہ علی عباسی ریحام خان کی کتاب کا مسودہ منظر عام پر لے کر آ ئےتھے جس کے بعد ریحام خان کی یہ کتاب میڈیا میں خبروں کی زینت بن گئی۔اسی متعلق گفتگو کرتے ہوئے حمزہ علی عباسی کا کہنا تھا کہ ریحام خان کی یہ کتاب بہت خطرناک ہے کیونکہ ریحام خان نے اس کتاب میں شعیہ اور سنی جیسے نازک مسئلے کو بھی نہ بخشا۔حمزہ علی عباسی کا کہنا تھا کہ ریحام خان اپنی کتا ب کے صفحہ نمبر 257 پر کہتی ہیں کہ میرا خاندانی پسِ منظر پختون ہے،اور میں سنی گھرانے سے تعلق رکھتی ہوں اس لیے پاکستان تحریک انصاف کی شعیہ لیڈر شپ میرے خلاف تھی۔ریحام خان نے ان پی ٹی آئی رہنماؤں کے نام بھی لکھے ہیں۔

جن میں شاہ محمود قریشی۔۔ شیریں مزاری،عارف علوی ،نعیم الحق،علی زیدی اور فردوس نقوی کےنام شامل ہیں۔۔ریحام خان کا کہنا ہے کہ ان تمام لوگوں کو مجھ سے نفرت تھی ۔اور انہوں نے میری عمران خان سے اس لیے طلاق دلوائی کیونکہ میرا سنی دیو بندی پس منظر تھا۔اور یہ تمام رہنما شعیہ تھے۔۔ریحام خان نے یہ بھی کہا ہے کہ عمران خان کو شعیہ فنڈنگ ہوتی ہے۔ریحام خان نے یہ بھی کہا ہے کہ پاکستان میں شعیوں کی نسبت سنی زیادہ انجوائے کرتے ہیں۔حمزہ علی عباسی کا کہنا تھا کہ ایک ایسی عورت جو خود کو لبرازم کا چیمپین کہتی ہے۔ان کی طرف سے یہ باتیں سن کر مجھے بہت حیرانی محسوس ہوئی۔۔پاکستان میں شعیہ اور سنی کو لے کر پہلے ہی بہت مسائل موجود ہیں ۔ایسے میں ریحام خان نے بھی اپنی کتاب میں یہ تذکرہ کر دیا ہے جو کہ بہت خطرناک ہے۔