ایک ہاتھ میں تسبیح ، دوسرے میں بوتل اور کمرے میں لڑکیاں۔۔۔۔ ریحام خان نے ملک چھوڑنے کا فیصلہ کرتے ہی بڑے بڑوں کو ننگا کر دینے والا انکشاف کر دیا

اسلام آباد ( مانیٹرنگ ڈیسک) تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی سابقہ اہلیہ ریحام خان نے پاکستانی کلچرپرتنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستانی کلچرکاسب سے بڑامسئلہ منافقت ہے مغرب میں منافقت نہیں،ہاتھ میں تسبیح ہوتی ہے، بند دروازے کے پیچھے نشہ اور کمروں میں خواتین بھی بند کی ہوتی ہیں، شادی شدہ لوگوں کے گھربھی تباہ کیے جاتے ہیں۔انہوں نے نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ پاکستانی کلچرکاسب سے بڑامسئلہ منافقت ہے۔ مغرب میں منافقت نہیں ہے۔وہاں اگرکچھ کیا جاتا ہے توکھلم کھلا کیا جاتا ہے۔میں جب بھی پاکستان میں چھٹی پرآئی تومیرے لیے پاکستانی کلچرکبھی بھی جاذب نہیں تھا۔ پاکستان میں رہنامیرے لیے سب سے بڑی سزا تھی۔

یہ صرف اس لیے تھا کہ پاکستانی اور مغرب کے کلچرمیں فرق ہے۔انہوں نے کہاکہ اگرآپ چادرپہن کراور دروازہ بند کرکے وہ کام کریں گے جوگورے شاید کبھی نہ کریں۔ہاتھ میں تسبیح ہو، دروازہ بند کرکے منشیات استعمال کررہے ہوں،خواتین کمروں میں بند کی ہوں، شادی شدہ لوگوں کے گھرانے تباہ کررہے ہوں۔ کم ازکم مغربی کلچرمیں ایسا نہیں ہوتا۔ اگروہاں کسی کوپتاہو کہ یہ شادی شدہ ہے توکوئی اس کی طرف نظراٹھا کربھی نہیں دیکھتا۔ وہاں اگرپاکستانی کلچرجیسا کچھ ہوتوملامت کی جاتی ہے لیکن یہاں بڑی دلیری سے کہا جاتا ہے کہ چارمیری بیویاں ہیں۔ریحام خان نے کہا کہ میں پاکستانی کلچرکا بڑامشاہدہ کیا ہے یہاں نمازکی صفوں میں بھی دیکھتے ہیں کہ کس نے ہاتھ کہاں باندھے ہیں۔