آصف زرداری کی بریت مک مکا کا ثبوت ہے،عمران خان

تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے کہا ہے کہ آصف زرداری کی کرپشن مقدمات میں بریت میثاق جمہوریت کے مک مکا کا ثبوت ہے،این اے 120 میں ن لیگ کی غنڈہ گردی کراچی میں ایم کیو ایم جیسی ہے۔ لاہور میں نیوز کانفرنس کے دوران عمران خان نے این اے 120 کو بار بار این اے 122 کہا صحافی کی نشاندہی کے باوجود این اے 122 کہنے پر قہقہے لگ گئے،پی ٹی آئی چیئرمین نے کہا کہ لاہور کا یہ ضمنی الیکشن پورے ملک کے لئے ٹیسٹ کیس ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ آصف زرداری کی سرے محل سمیت اربوں روپے کی جائیداد بیرون ملک ہے،کرپشن مقدمات میں سابق صدر کی بریت مک مکا کی سیاست کا ثبوت ہے ،ن لیگ اور پی پی نے مل کر چیئرمین نیب اسی لئے لگایا تھا۔ عمران خان نے یہ بھی کہا کہ سپریم کورٹ نے چیئرمین نیب پر عدم اعتماد کا اظہار کیاتھا،جس نیب پر پاکستان کی سب سے بڑی عدالت کو اعتماد نہیں اس کے فیصلے کو کیسے مان لیں ؟

پی ٹی آئی چیئرمین نےکہا کہ پاکستان کی تاریخ میںشریف فیملی کو اپنی بیگناہی ثابت کرنے کا سب سے زیادہ موقع ملا،ضمنی الیکشن سے فیصلہ ہوجائےگا کہ پاکستان پر ڈاکوئوںکی یا قانون کی حکمرانی ہوگی۔ ان کا یہ بھی کہناتھاکہ الیکشن کمیشن ضمنی انتخابات میں مہم چلانے کی اجازت دے کیونکہ میرے پاس کوئی سرکاری عہدہ نہیں،پوچھتا ہوں کہ یہ کیسی جمہوریت ہے کہ پارٹی سربراہ کو اپنا منشور بتانے کی اجازت نہیں۔

پی ٹی آئی سربراہ نے این اے 120 کی انتخابی مہم کے دوران پارٹی خواتین کو حراساں کئے جانے پر کہا کہ آئی جی پنجاب نے کارکنوں کو تحفظ نہ دیا تو ان کے خلاف عدالتوں میں جائیں گے ،آئی جی پاکستان کے تنخواہ دار ہیں شریف خاندان کے نہیں۔

پریس کانفرنس کےد وران عمران خان نے خیبرپختونخوا کے احتساب نظام کی ناکامی کا بھی اعتراف کیا اور کہا کہ احتساب کمیشن نے ہمارے وزیر اور پولیس افسر کو ہتھکڑیاں لگائیں ،لیکن اس کے باوجود ہم ویسانظام نہیں لاسکے جیسا چاہتے تھے۔ عمران خان نے کہا کہ نواز شریف کے خیال میں ان کی حکومت ہوتے ہوئے فیصلہ خلاف آنا سازش ہے۔