مریم نواز نے اپنی والدہ کلثوم نواز کی الیکشن مہم کا آغاز کردیا

پاناما پیپرز کیس میں سپریم کورٹ کی جانب سے نااہل قرار دیئے جانے والے سابق وزیراعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز نے اپنے والد کی خالی نشست قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 120 پر ضمنی انتخاب کے لیے مسلم لیگ (ن) کی نامزد اُمیدوار اپنی والدہ کلثوم نواز کی الیکشن مہم کا باقائدہ آغاز کردیا ہے۔ الیکشن کمیشن آف پاکستان کے جاری اعلامیے کے مطابق سابق وزیراعظم نواز شریف کی سبکدوشی کے بعد حلقہ این اے 120 پر ضمنی انتخابات 17 ستمبر 2017 کو ہوں گے۔

خیال رہے کہ گذشتہ ہفتے مسلم لیگ (ن) کے رہنماؤں اور خود مریم نواز نے اپنے ٹوئٹر پیغام میں تصدیق کی تھی کہ لندن میں مقیم کلثوم نواز کو گلے کے کینسر کی تشخیص ہوئی ہے، ’جو قابل علاج ہے‘۔ مریم نواز نے لاہور کے ماڈل ٹاؤن میں قائم وزیراعلیٰ پنجاب کے سیکریٹریٹ میں قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 120 کے پارٹی ورکرز اور نمائندوں کے ایک اجلاس میں شرکت کی تاہم اس موقع پر وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف سیکریٹریٹ میں موجود نہیں تھے۔

یاد رہے کہ گذشتہ 4 سال سے یہ عمارت الیکشن اور دیگر ایسی ہی سرگرمیوں کے لیے مستقل طور پر وزیر اعلیٰ پنجاب کے صاحبزادے حمزہ شہباز کے زیر استعمال تھی، تاہم یہ افواہیں گردش کررہی ہیں کہ انہیں مذکورہ مہم سے دور رہنے کو کہا گیا ہے یا شاید وہ اس معاملے سے خود کو دور رکھنا چاہتے ہیں جس کی وجہ سے شریف خاندان میں موجود تناؤ واضح نظر آرہا ہے۔

اس اجلاس میں مریم نواز کے ہمراہ سابق وزیراعظم کے قریبی اور قابل اعتماد مشیر سینیٹر پرویز رشید موجود تھے، جن کی موجودگی میں سابق وزیراعظم کی صاحبزادی نے مسلم لیگ (ن) کے رہنماؤں اور کارکنوں کو بھرپور مہم چلانے کا کہا۔ ان کی حمایت میں لگنے والے نعروں کے جواب میں مریم نواز نے زور دیا کہ پارٹی کے ارکان کو اپنے اختلافات ختم کرکے ضمنی انتخابات میں ان کی والدہ کی کامیابی کے لیے ساتھ مل کر کام کرنا چاہیے۔