برطانوی وزیراعظم کو ہسپتال سے گھر منتقل کردیا گیا

لندن (اردو نیوز) برطانوی وزیراعظم بورس جانسن کی طبیعت بہتر ہوگئی، بورس جانسن کو گھر منتقل کردیا گیا، برطانوی وزیراعظم میں27 مارچ کو کورونا کی تصدیق کے بعد آئی سی یو منتقل کیا گیا تھا۔ ترجمان ٹین ڈاؤننگ سٹریٹ کے مطابق برطانوی وزیراعظم بورس جانسن کی طبیعت اب بالکل ٹھیک ہے، وہ چہل قدمی کرسکتے ہیں۔ اس لیے ان کو ہسپتال سے گھر منتقل کردیا گیا ہے۔

ترجمان برطانوی وزیراعظم کا کہنا ہے کہ بورس جانسن فی الحال حکومتی امور اور اپنی ذمہ داریاں نہیں سنبھالیں گے، وہ فی الحال گھر میں آرام کریں گے۔ ان کا کہنا ہے کہ برطانوی وزیراعظم جب تک مکمل صحت یاب نہیں ہوجاتے وہ تب تک لندن سے باہر سرکاری رہائشگاہ چیکرز میں قیام کریں گے۔ واضح رہے برطانوی وزیراعظم بورس جانسن میں 27 مارچ کو کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی تھی۔

جس پر انہوں نے خود کو گھر پر ہی قرنطینہ کر لیا تھا۔ لیکن جب ان کی طبیعت زیادہ خراب ہوئی تو انہیں لندن کے سینٹ تھامس ہسپتال کے آئی سی یو میں منتقل کر دیا گیا تھا۔ لیکن اب ان کی طبیعت ٹھیک ہے۔ جس پر انہیں گھر منتقل کردیا گیا ہے۔ برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن نے کہا کہ ایک ہفتے کے قیام کے بعد آج اسپتال سے ڈسچارج ہوگیا ہوں۔ عوام کا شکریہ جو کورونا چیلنج کیخلاف گھروں پر رہ کر ساتھ دے رہےہیں۔

ہم سب مل کر کورونا وائرس کو شکست دیں گے۔ مجھے پتا ہے کہ سماجی فاصلے کرنا کتنا مشکل ہے۔ نیشنل ہیلتھ سروس کو محفوظ رکھیں گےتو کورونا کا مقابلہ کرسکیں گے۔ برطانوی عوام تحمل سے آئیسولیشن میں خود کی اور دوسروں کی زندگی بچا رہے ہیں۔ پچھلے7 دنوں میں نیشنل ہیلتھ سروس پر کافی دباؤ ہے۔ دوسری جانب برطانوی حکومت نے لاک ڈاون کی موجودہ صورتحال اگلے کئی ماہ تک برقرار رکھنے کا عندیہ دیا ہے۔

برطانوی حکام کا کہنا ہے کہ ملک میں کرونا وائرس کی ویکسین کی دستیابی تک صورتحال زندگی معمول پر نہیں آسکے گی۔ ویکسین کی تیاری میں ایک اندازے کے مطابق 18 ماہ لگ سکتے ہیں۔ کہا گیا ہے کہ آنے والے دنوں میں برطانیہ میں لاک ڈاون میں کچھ نرمی کی جا سکتی ہے، تاہم لاک ڈاون کا مکمل خاتمہ جلد ممکن نہیں ہے۔ پابندیوں میں نرمی کا فیصلہ برطانوی وزیراعظم بورس جانسن کی ہسپتال سے واپسی کے بعد ہی کیا جائے گا۔