مسجد الحرام مکہ میں تمام ٹچ سکرینز عارضی طور پر معطل کر دی گئیں

مکہ ۔ (اُردو نیوز) سعودی عرب میں کرونا وائرس کے مریضوں کی گنتی میں ہر روز اضافہ دیکھنے میں آ رہا ہے۔ سعودی وزارت صحت کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ مملکت میں کرونا کا ایک اور مریض سامنے آ گیا ہے۔ جس کے بعد کرونا کے مجموعی متاثرین کی گنتی 21 تک جا پہنچی ہے۔ عرب میڈیا کے مطابق کورونا وائرس سے بچاؤ کے لیے مکہ میں احتیاطی تدابیر کے طور پر مزید اقدامات کیے گئے ہیں جن میں مسجد الحرام میں نصب رہنما سکرین کو عارضی طور پر بند کر دیا گیا ہے۔

یہ سکرینز رہنمائی اور معلومات کے لیے داخلی راستوں اور مختلف مقامات پر نصب ہیں۔ یہ اقدام کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کی کوششوں کا حصہ ہے۔ سعودی عرب کے دونوں مقدس شہروں مکی مکرمہ اور مدیہ منورہ میں موجود مسجد الحرام اور مسجد نبوی کے معاملات کی جنرل پریذیڈنسی اتھارٹی کی جانب سے دونوں مساجد میں آنے والے زائرین کی صحت کی حفاظت کے طور پر یہ اقدام اٹھایا گیا ہے۔

محکمہ کے ڈائریکٹر علی بن حمید النافعی نے بتایا ہے کہ کچھ نصب سکرین پر نظر آنے والی ہدایات اور معلومات کو ریموٹ کے ذریعے کنٹرول کیا جائے گا باقی کو بند کر دیا جائے گا۔ اس کے علاوہ غیر ملکی زائرین کے لیے عارضی پابندی بھی کورنا وائرس سے بچاؤ اور حفاظتی اقدامات کا حصہ ہے۔ اسی طرح ملک بھر میں صحت کے حوالے سے دیگر اقدامات کے ساتھ حفاظتی تدابیر پرعمل کیا جا رہا ہے۔

دوسری جانب میئر مکہ انجنیئرمحمدعبداللہ القویحص نے بلدیہ کے زیر انتظام پرندوں کی مارکیٹوں اور یومیہ بنیاد پرلگنے والے پرندوں کے بازار کو عارضی طورپر بند کرنے کا حکم دیا ہے۔ میئر مکہ کی جانب سے ریجنل بلدیاتی اداروں کو احکامات جاری کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ احتیاط کے پیش نظرمکہ میں پرندوں کی راویتی مارکیٹوں کو عارضی طور پر بند کر دیا جائے۔میئر کی جانب سے بلدیاتی اداروں کو مزید کہا گیا ہے کہ ’احتیاط کے طور پر پرندوں کے جمع ہونے والے مقامات پر جراثیم کش ادویات کا سپرے کیاجائے۔جبکہ مسجد الحرام اور مسجد نبوی کی جنرل پریذیڈنسی نے کارکنوں کے لیے فنگر پرنٹس کے ذریعے شناخت کا عمل بھی وقتی طور پر معطل کر دیا ہے۔