سعودی حکومت نے اقامہ اور نئے ویزے پر آنے والے غیر ملکیوں پرپابندی عائد کر دی

جدہ (اُردو نئوز) سعودی مملکت میں کرونا وائرس کے شکار افراد کی گنتی میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ حالانکہ حکومت کی طرف سے کرونا وائرس کے سدباب کے لیے موثر منصوبہ سازی کی گئی ہے ، ایئرپورٹس، بحری اور فضائی راستوں سے آنے والے تمام افراد کا موقع پر ہی طبی معائنہ کیا جا رہا ہے۔ سعودی حکومت کی جانب سے غیر ملکیوں کو آگاہ کر دیا گیا ہے کہ اقامہ اور نئے ویزے پر آنے والے غیر ملکیوں کو میڈیکل سرٹیفکیٹ پیش کرنا ہو گا۔

سعودی ویب سائٹ عاجل کے مطابق کورونا سے متاثرہ ممالک سے آنے والے اقامہ ہولڈرز اور ویزہ یافتگان کو میڈیکل سرٹیفکیٹ پیش کرنا ہو گا جس سے یہ پتا چل سکے کہ اسے کورونا وائرس لاحق نہیں ہے۔یہ سرٹیفکیٹ ان لوگوں کے لیے پیش کرنا لازمی ہے جنہوں نے کورونا کے شکار ممالک میں 14 روز سے زائد کا وقت گزارا ہو۔ وزارت داخلہ نے واضح کیا ہے کہ یہ فضائی کمپنی کی ذمہ داری ہو گی کہ وہ کسی بھی مسافر کو مملکت آنے والے جہاز میں سوار کرانے سے قبل اس بات کی تسلّی کر لے کہ اس کے پاس میڈیکل سرٹیفکیٹ موجود ہے، جس کا اجراء 24 گھنٹوں کے اندر ہوا ہے۔

متعلقہ ممالک میں موجود سعودی سفارت خانوں کی جانب سے مقررہ کردہ طبی اداروں سے لیا گیا میڈیکل سرٹیفکیٹ ہی قابل قبول ہو گا۔واضح رہے کہ سعودی حکومت نے اعلان کیا ہے کہ کرونا وائرس کے خطرے کے پیش نظر تین خلیجی ممالک متحدہ عرب امارات، بحرین اور کویت سے مملکت میں ان افراد کو داخل ہونے کی اجازت دی جائے گی جو بذریعہ ہوائی جہاز سفر کریں گے۔

مملکت کی زمینی سرحد سے صرف ان ملکوں سے آنے والے مال بردار ٹرکوں داخلے کی اجازت ہوگی۔ وزارت داخلہ کے ذرائع نے بتایا ہے کہ سعودی عرب میں محکمہ صحت کے مجاز حکام کی طرف سے تجویز کردہ احتیاطی تدابیر کے مطابق کرونا وائرس (کوویڈ 19) کی روک تھام، سعودی شہریوں اور مقیم افراد صحت کی حفاظت یقینی بنانے سخت حفاظتی انتظامات کیے گئے ہیں۔ اسی ضمن میں تین خلیجی ممالک بحرین، امارات اور کویت سے سفر کو صرف ہوائی جہاز تک محدود کر دیا گیا ہے۔

الریاض کے شاہ خالد انٹرنیشنل ایئر پورٹ، جدہ میں شاہ عبد العزیز بین الاقوامی ہوائی اڈے اور دمام میں شاہ فہد بین الاقوامی ہوائی اڈے کی انتظامیہ کو ہدایت ہے کہ وہ مذکورہ تین عرب ممالک سے صرف ان افراد کو مملکت میں داخلے کی اجازت دیں جو بذریعہ جہاز آئیں۔ اس کے علاوہ ان تینوں ممالک سے ملانے والے بری راستوں پر صرف مال بردار گاڑیوں کو گذرنے کی اجازت ملے گی۔