سعودی عرب میں پاکستانی ڈرائیور نے ایمانداری کی اعلیٰ مثال قائم کردی

ریاض (اُردو نیوز) ریاض میں پاکستانی ٹیکسی ڈرائیور نے ایمانداری کی اعلیٰ مثال قائم کر دی۔ تفصیلات کے مطابق پاکستانی ٹیکسی ڈرائیور نے ریاض میں موجود ایک بھارتی خاتون کا گُما ہوا پرس اُسے واپس لوٹا دیا۔ سوشل میڈیا پر وائرل ایک ویڈیو میں بھارتی خاتون نے بتایا کہ میں آپ سب کو یہ بتانا چاہتی ہوں کہ یہ جناب پاکستان سے ہیں، میں ریاض میں کاروبار کے سلسلے میں موجود ہوں۔

میں کل ان کی ٹیکسی میں سفر کر رہی تھی، میں ان کی ٹیکسی میں اپنا والٹ بھول گئی تھی جس میں میرا اور میرے بیٹے کا پاسپورٹ اور 50 ہزار روپے تھے۔ یہ جناب آئے ہیں، اور مجھے میرا والٹ جیسا تھا جس حالت میں تھا انہوں نے واپس کر دیا ہے۔ خاتون نے کہا کہ میں ان کی ایمانداری سے بہت خوش ہوں اور یہ کہنا چاہتی ہوں کہ مسلمان یا پاکستانی افراد کے لیے ہمارے اندر جو سوچ ہے وہ ایک سوچ ہی کی حیثیت رکھتی ہے جو ہمارے اندر بھری جاتی ہے کیونکہ حقیقت میں ایسا کچھ بھی نہیں ہے۔

یہ پاکستانی ہیں، یہ مسلمان ہیں۔ میں ہندو ہوں اور ان کو یہ معلوم تھا لیکن اس کے باوجود انہوں نے مجھے ڈھونڈ کر میرا پاسپورٹ اور والٹ واپس لوٹایا ، مجھے ان سے مل کر بے حد اچھا لگا ۔ میرے پاس ان کا شکریہ ادا کرنے کے لیے الفاظ نہیں ہیں۔ سوشل میڈیا پر وائرل اس ویڈیو کو آپ بھی ملاحظہ کیجئیے:

سوشل میڈیا پر یہ ویڈیو وائرل ہوئی تو صارفین نے کہا کہ ایماندار ٹیکسی ڈرائیور نے اپنی ایمانداری سے ایک نئی اور اعلیٰ مثال قائم کر دی۔ ہمیں ایسے ایماندار افراد کی حوصلہ افزائی کرنی چاہئیے۔ کیونکہ پاکستانی ٹیکسی ڈرائیور کی اسی ایمانداری کی وجہ سے ایک بھارتی خاتون پاکستانی اور مسلمان افراد کے بارے میں اپنے خیالات بدلنے پر مجبور ہو گئیں جو کہ قابل تحسین ہے۔