سرجیکل اسٹرائیک کی ناکامی کے بعد بھارت نے پاکستان کیخلاف نیا محاذ کھول دیا، افغانستان بھی خطرناک کھیل میں شامل

اسلام آباد (ویب ڈیسک) بھارت نے پاکستان کے خلاف دہشتگردی کی ایک نئی لہر لانچ کر دی ہے۔ تفصیلات کے مطابق بھارت نے ملٹی ملین ڈالرز سبورژن ایکشن ” آپریشن اویناش” کے تحت پاکستان کے خلاف تازہ دہشتگردی کی لہر لانچ کر دی ہے۔ نئی دہلی کی نئی کارروائی ایک مرتبہ پھر سے افغان سرزمین کو استعمال کرتے ہوئے لانچ کی گئی ۔سبورژن ایکشن میں افغانستان سے آپریٹ کرنے والے دہشتگرد گروپس اور ڈرگ کارٹلز کو جوائنٹ آپریشنز کے لئے استعمال کیا جا رہا ہے ۔ اعلٰی سکیورٹی ذرائع نے الواڑہ (شمالی وزیرستان )میں دہشتگرد کارروائی کے بیک گراؤنڈ میں قومی اخبار سے ٹاپ انٹیلی جنس اداروں کی رپورٹس شیئر کرتے ہوئے بتایا کہ ان تازہ دہشتگرد کارروائیوں میں بھارت کی ایکسٹرنل سیکریٹ سروس را اور ملٹری انٹیلی جنس ملوث ہیں۔ذرائع کے مطابق ان کو افغان سکیورٹی سروس این ڈی ایس کی معاونت حاصل ہے ۔

افغان سرزمین سے آپریٹ کرنے والے دہشتگرد گروپس اور ڈرگ کارٹلز کے کرائے کے سپاہیوں کو ان کارروائیوں کے لئے استعمال کیا جا رہا ہے جن میں غیر ملکی فائٹر بھی شامل ہیں، الواڑہ دہشتگرد حملہ انہی گروپس سے لانچ کروایا گیا۔ جبکہ اس آپریشن کو دوحصوں میں تقسیم کیا گیا ہے۔ایک میں سابق فاٹا اور خیبر پختونخوا اور دوسرے میں بلوچستان اس کا ٹارگٹ ہیں ۔ پاکستان کی افغانستان کے ساتھ بارڈر پر فینسنگ کو نقصان پہنچانا بھی ہدف ہے ، سابق فاٹا علاقوں میں بدامنی ،سی پیک کو ٹارگٹ کرنا، بلوچستان میں بدامنی پھیلانا، سکیورٹی فورسز پر حملے ، پاکستان مخالف علاقائی جماعتوں کو استعمال کرتے ہوئے پاکستان کے خلاف پراپیگنڈہ آپریشنز کرکے بغاوت کے جذبات اُبھارنا اس آپریشن کے اہداف ہیں، ان کارروائیوں کے لئے ٹی ٹی پی ، جماعت الاحرار، داعش، لشکر جھنگوی اور ان جیسے دیگر گروپس ، بلوچ لیبریشن آرمی، بلوچ ریپبلیکن آرمی، بلوچستان لیبریشن فرنٹ، بلوچ ریپبلیکن پارٹی ، پشتون تحفظ موومنٹ اور ان سے قریب دیگر گروپس کو استعمال کیا جا رہا ہے کابل میں بھارت کا سفارتخانہ ان کارروائیوں کا مرکز ہے۔

را کا سٹیشن چیف افغانستان اور ملٹری انٹیلی جنس کا کمانڈر انڈر ڈپلومیٹک کور میں ” آپریشن اویناش” چلا رہے ہیں۔ سب اسٹیشنز میں سرفہرست جلال آباد اور سپن بولدک شامل ہیں۔ افغان صوبوں کنڑ پکتیا اور نورستان کا استعمال بھی کیا جا رہا ہے ۔ ڈرگ کارٹلز کا پیسہ بھی استعمال کیا جا رہا ہے ، آپریشن کی مالی سپورٹ کا ایک حصہ بھارتی ایجنسیوں کے سیکریٹ فنڈ ز سے آ رہا ہے ۔پاکستان ، افغانستان بارڈر پر فینسنگ مکمل ہو گئی تو ڈرگ کارٹلز کا دھندہ نہ ہونے کے برابر رہ جائے گا ۔ ذرائع کے مطابق این ڈی ایس کے ننگرہار، کنڑ، قندھار اور پکتیا میں سیف ہاوسز پر بھارتی را اور ملٹری انٹیلی جنس کے آپریٹرز کی موو منٹ سپاٹ کی گئی ہے ۔ ملک کے ٹاپ انٹیلی جنس اداروں نے ہیومن اور ٹیکنیکل انٹیلی جنس کی بنیاد پر ” آپریشن اویناش” کے بارے میں انفارمیشن حاصل کی۔