جسے اللہ رکھے اسے کون چکھے! ایتھوپین فلائیٹ تباہ ہو نے سے 147مسا فر ہلاک لیکن صرف یہ ایک مسا فر زندہ بچ گیا وہ بھی کیسے ؟ ہر کسی کو حیران کر دینے والی خبر

لاہور (ویب ڈیسک) نیروبی جانے والی ایتھوپین فلائیٹ بوئنگ 737 میکس ایٹ جو حادثے کا شکار ہوئی جس میں سوار تمام 147 افراد لقمہ اجل بن گئے۔ چین کی سول انتظامیہ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ جدید طیارہ 737 میکس 8 گذشتہ پانچ ماہ کے دوران دو مرتبہ حادثے کا شکار ہوا اور یہ حادثات پرواز کے اُڑان بھرنے کے بعد پیش آئے۔جہاں اس بدقسمت

طیارے میں سوار کوئی بھی شخص بچ نہ پایا وہاں ایک مسافر ایسا بھی تھا جس کے مقدر میں اس دن موت نہیں لکھی تھی۔اس مسافر کا نام ہے احمد خالد جو صرف چند ہی منٹ کی تاخیر کی وجہ سے اس طیارے میں سوار نہ ہوسکا۔ میڈیا سے بات کرتے ہوئے مسافر احمد خالد نے کا کہنا تھا کہ نیروبی جانے والی فلائیٹ میں تاخیر سے پہنچنے پر معلوم ہوا کہ اس کی فلائیٹ مس ہوچکی ہے جس پر حکام نے اس کے لیے ایک اور فلائیٹ کا بندوبست کردیا، جس پر اسے کوئی اعتراض نہیں تھا۔حادثے کے بارے میں گفتگو کرتے ہوئے احمد خالد نے کہا

کہ حکام سے بات کرنے بعد میں لاؤنچ میں ٹی وی دیکھنے میں مصروف ہوا کہ تقریباً 5 منٹ کے وقفے کے بعد اسی طیارے کے تباہ ہونے کی بریکنگ نیوز چلی جسے اس نے تھوڑی دیر پہلے مِس کیا تھا، میرے والد جو نیروبی ائیرپورٹ پر میرے انتظار میں تھے سکتے کی کیفیت میں آگئے اور دبئی میں حکام سے رابطہ کرنے کے بعد انہیں میری حالت کے بارے میں معلوم ہوا۔احمد خالد کا مزید کہنا ہے کہ میں ابھی تک ایک صدمے کی حالت میں ہیں، ان 147 افراد میں میرا نام بھی شامل ہوسکتا تھا مگر میں نہیں جانتا میں کیسے بچ گیا