سعودی عرب میں محمد بن سلمان کی حکومت کے خلاف بغاوت دارالحکومت ریاض میں فوج کو طلب کر لیا گیا پوری عرب دنیا میں کھلبلی مچ گئی

ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی فرمانروا اور ولی عہد کے تخت و تاج کے خلاف اٹھنے والی آوازوں کی شدت کو سعودی حکومت نے محسوس کر لیا ہے جس کے بعد دونوں اہم شخصیات کےخلاف ہونے والی ممکنہ بغاوت کو کچلنے کےلئے دارالحکومت ریاض میں فوج کو طلب کر لیا گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے خلاف شاہی خاندان کے دیگر شہزادوں کی ممکنہ بغاوت سے آہنی ہاتھوں سے نمٹنےکا فیصلہ کرلیا گیا ہے ۔

ایک ایسی وقت میں جب شہزادہ محمد بن سلمان جی 20ممالک کی سربراہ کانفرنس میں شرکت کےلئے ارجنٹائن جا چکے ہیں ۔ ان کے خلاف سعودی شاہی خاندان کے کئی شہزادوں نے علم بغاوت بلند کر دیا ہے اور حکومت کوگرائے جانے کے اقدامات تیز کر دیے ہیں۔ سعودی ولی عہد نے دارالحکومت میں اپنی وفادار فوج تعینات کردیے ہیں۔ واضح رہے کہ جلا وطن ہو کر جرمنی فرار ہونے والے باغی شہزادے خالد بن فرحان السعود نے محمد بن سلمان کے رویے کو جاہلانہ اور متکبرانہ قرار دیتے ہوئے شاہی خاندان میں اپوزیشن کو متحرک کرتے ہوئے ان کی حکومت گرانے کا عندیہ دے رکھا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں