جمال خشوقجی کے قتل کی تصاویر منظر عام پر آگئیں

انقرہ ( مانیٹرنگ ڈیسک ) ترکی میں قتل ہونے والے صحافی جما ل خشوقجی کے قتل نے پوری دنیا میں ہلچل مچا رکھی ہے۔ جمال خشوقججی کے قتل کے بعد ترکی، امریکہ اور سعودی عرب کے درمیان سفارتی معمالات میں کشیدگی نظر آئی ہے۔ ترک کے ذرائع ابلاغ نے جمال خشوقجی کے قتل کی ایک ویڈیو جاری کی جس میں دیکھا گیا کہ جمال خشوقجی سعودی سفارتخانے میں داخل ہوتے ہیں۔

مگر وہاں سے جو شخص نکلتا ہے وہ جمال خشوقجی نہیں بلکہ سعودی عرب سے بھیجی گئی ٹیم کا ہی ایک فرد ہوتا ہے جو کہ یہ ظاہر کرنے کی کوشش کرتا ہےکہ جمال خشوقجی ہی سفارتخانے سے واپس جا رہے ہیں اور ٹیم پر کسی قسم کا شک نہ آئے تاہم ابب جمال خشوقجی کے قتل کی لرزہ خیز تصاویر سامنے آگئی ہیں جنہوں نے پوری دنیا میں تہلکہ مچا دیا ہے۔ ویب سائٹ ’’ ال سورہ ‘‘ کی ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ’’ ترکی کے ذرائع نے کچھ تصاویر ہم تک پہنچائی، ہم نے ذرائع سے ان تصاویر کے حقیقت پر مبنی ہونے کے حوالے سے دستاویز ثبوت طلب کیے۔

ہماری ریسرچ کےمطابق یہ تصاویر بالکل سہی ہیں اور جائے وقوعہ پر ہی لی گئی ہیں۔ ہم اپنے ذرائع کے شکر گزار ہیں جنہوں نے ہم تک یہ تصاویر پہنچائی ‘‘۔( تصاویر خبر کے آخر میں ملاحظہ کریں ) خیال رہے کہ کچھ عرصہ قبل ترک میں قائم سعودی سفارتخانے میں سعودی صا فی کو قتل کر دیا گیا تھا۔ جس کے حوالے سے سعودی پبلک پراسیکیوٹر نے 11 افاراد پر فرد جرم عائد کر دی ہے جبکہ 5 افراد کے سر ققلم کرنے کی استدعا کی ہے۔

سعودی پبلک پراسیکیوٹر کا کہنا تھا کہ یہ 5 افراد برائے راست ہونے والی قتل کی کارروائی کی نگرانی کرتے رہے ۔ جبکہ جس ٹیم کو جمال خشوقجی کو سعودی عرب واپس لانے کا ٹاسک دیا گیا تھا اسی ہی ٹیم کے سربراہ نے اپنے تئی منصوبے کو تبدیل کرتے ہوئے جمال خشوقجی کو قتل کرنے کا منصوبہ بنایا تھا۔ سعودی عرب کی جانب سے ملزمان کے نام ظاہر نہیں کیے گئے ۔

تصاویر دیکھیں: