تُرکی ، استنبول میں سالانہ 20 کروڑ مسافروں کی گنجائش والے نئے ایئرپورٹ کا افتتاح

ترکی کے صدر رجب طیب اردگان نے استنبول کے تیسرے ایئرپورٹ کا افتتاح کر دیا ہے جو منصوبے کے تحت 2028 تک دنیا کا سب سے بڑا اور مصروف ترین ایئرپورٹ بن جائے گا ۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق اس ایئرپورٹ کے ابتدائی مراحل میں 2021 تک سالانہ 9 کروڑ مسافروں کی آمدورفت کی گنجائش ہوگی جو کہ بتدریج اگلے چند برسوں میں بڑھ کر 20 کروڑ تک پہنچ جائے گی ۔ دنیا کا اس وقت مصروف ترین ایئرپورٹ امریکہ میں اٹلانٹا کا ہے جہاں سالانہ 10 کروڑ 40 لاکھ مسافروں کو سنھبالنے کی گنجائش ہے لیکن استنبول کا یہ نیا ایئرپورٹ تنازعات سے خالی نہیں ہے ۔

اس کی تعمیر میں اب تک 30 مزدورں کی موت واقع ہو چکی ہے ۔ صدر اردگان نے جدید ترکی کے قیام کی 95 ویں سالگرہ کے موقع پر ایئرپورٹ کا افتتاح کیا لیکن یہ صرف علامتی تھا کیونکہ اس کے پہلے ہفتے میں صرف گنتی کی ہی چند پروازیں اس ایئرپورٹ پر آئیں گی ۔ رپورٹ کے مطابق 12 ارب ڈالر کی لاگت سے بنا یہ ایئرپورٹ صدر اردگان کے لیے نہایت اہم ہے کیونکہ انھیں توقع ہے کہ اس منصوبے کی مدد سے استنبول بین الاقوامی آمدو رفت کا مرکز بن جائے گا جہاں سے ایشیا ، یورپ اور افریقی ممالک کو ملایا جا سکے گا ۔

استنبول کا موجودہ اتاترک ایئرپورٹ اس سال کے آخر تک معمول کی پروازوں کے لیے استعمال ہوتا رہے گے لیکن اگلے سال سے شہر کے مرکزی ایئرپورٹ کی حیثیت نئے ہوائی اڈے کو مل جائے گی اور اتاترک ایئرپورٹ نجی طور پر استعمال ہوتا رہے گا ۔ نئے ایئرپورٹ کے منصوبے کے تحت پہلے مرحلے میں 2021 تک اس میں سالانہ 9 کروڑ مسافروں کی گنجائش ہوگی ، جس کے بعد 2023 تک اسے بڑھا کر 15 کروڑ اور پھر 2028 تک 20 کروڑ تک پہنچانے کا ارادہ ہے ۔ استنبول کے ایشیائی حصے میں واقع شہر کے تیسرے ایئرپورٹ صبیحا گورکن پر ان تبدیلیوں کا کوئی اثر نہیں ہوگا اور وہاں پروازیں معمول کے مطابق اڑیں گی ۔