کسی لڑکی کی لاش ملے اور معلوم کرنا ہو کہ وہ مسلم ہے یا غیر مسلم ، تو کیا طریقہ اختیار کیا جائے ؟ تاکہ درست طور پر اسکی آخری رسومات ادا کی جائیں ، جانیے

لاہور( ویب ڈیسک) آج کل سوشل میڈیا پر یہ سوال گردش کر رہاہے کہ اگرکوئی لڑکی مردہ حالت میں پائی جائے تواس کودیکھ کرکیسے پتہ چلے گاکہ وہ مسلمان ہے یاغیرمسلم۔ اس حوالے سے سوشل میڈیاکرکافی بحث ہوچکی ہے لیکن اس سوال کا ابھی تک جواب طلب ہے. اس سوال کے کئی جواب سامنے آئے ہیں کچھ لوگوں کے مطابق اگرلاش کسی مسلم بستی سے ملی ہے تواس کومسلمان ہی سمجھا جائے اوراگر کوئی علامت اس کے غیرمسلم ہونے کی نہ ہوتواس کاکفن اسلام کے مطابق ہوگا اس کے علاوہ اگرکوئی غیرمسلم ہونے کی علامت پائی جائے جیساکہ ماتھے پرتلک جوکہ ہندو ہونے کی علامت ہےتواسے غیرمسلم ہی تصویر کیا جائے گا۔

اس کے علاوہ کچھ لوگوں کی رائے میں اگرلڑکی شناخت نہ ہوتواس کوغسل دے دیا جائے اورجس پانی میں غسل دی اجائے اسی پانی کوگھوڑے کے سامنے رکھ دیاجائےاگرگھوڑے نے پانی پی لیا تووہ مسلمان ہے اگرنہیں پیاتوغیرمسلم ہے.اس ساری بحث کے ساری بحث کے بعدیہ بات پختہ اوریقینی نہیں ہے جس سے سوفیصد پتہ لگایا جاسکے کہ لڑکی مسلم ہے یاغیرمسلم.