سمندر سے خوفناک دیوہیکل مخلوق کا ظہور جس نے دیکھا اس پر سکتہ طاری ہو گیا، دیکھ کر آپ بھی خوف کے مارے آنکھیں بند کر لیں گے

فلپائن کے جزیرے کے ساحل پر خوفناک دیوہیکل آبی مخلوق کا مردہ جسم ظاہر ، ساحلی محافظوں خوف کے مارے ساکت رہ گئے۔ تفصیلات کے مطابق فلپائن کے جزیرے لیئتی کے شہر شالو آف میسن کے ساحل پر خوفناک آبی مخلوق کا مردہ جسم ظاہر ہوا ہے جسے دیکھ کر ساحلی محافظ بھی خوف سے ساکت رہ گئے ۔ فلپائن کے محکمہ فشریز اور سمندری ذخائر کے اہلکار جولیس اپلینو کے مطابق خوفناک آبی مخلوق کو شناخت نہیں کیا جا سکا ، ساحل پر تیرتیاس خوفناک آبی مخلوق کی لاش مرنے کے بعد گلنے سڑنے کے عمل سے گزر رہی ہے۔ ساحلی شہر کی انتظامیہ نے اس آبی مخلوق کے جسم ک کو واپس سمندر میں دھکیلنے کا فیصلہ کیا ہے۔ شہری انتظامیہ کے مطابق 32 فٹ لمبی اس سمندری بلا کو واپس سمندر میں دھکیل دیا جائے گا کیونکہ اس کے قد کاٹھ کی وجہ سے اس کا شہر میں دفنایا جانا مشکل کام ہے جبکہ اس کا جسم بھی گل سڑ رہا ہے جس سے اٹھنے والے تعفن کی وجہ سے شہری علاقوں میں بیماریاں پھیلنے کا خدشہ ہے۔

جولیس اپلینو نے امکان ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہو سکتا ہے کہ یہ ایک طویل القامت وہیل مچھلی ہو جس کی لمبائی ایک جنگی فائٹر طیارے جتنی ہے ۔ ساحل پر اس وہیل نما خوفناک آبی مخلوق کا انکشاف اس وقت ہوا جب ایک مقامی شخص نج نج کیپسترانو جس کی عمر 42 برس نے ایک طویل القامت جسم کو ساحل پر تیرتے ہوئے دیکھا جس پر اس نے اس کی فوری طور پر تصاویر بنا لیں۔ نج نج نے بتایا کہ وہ ساحل سے گزر رہا تھا کہ اس نے ایک بڑے جسم کو پانی میں تیرتے ہوئے دیکھا جس پر اس نے فور ی طور پر اس کی تصاویر بنا لیں مگر وہ اس کی تفصیلات نہیں جانتا کہ یہ کیا چیز ہےمگر میں اتنا ضرور جانتا ہوں کہ جب میں نے اسے ساحل پر تیرتے دیکھا تو اس وقت یہ مرا ہوا تھا اور اس کا جسم پانی پر تیر رہا تھا۔ اس کے مردہ جسم سے اٹھنےوالے تعفن سے میری آنتیں منہ کو آرہی تھیں۔ شہری انتظامیہ کی جانب سے احکامات ملتے ہی اب ریسکیو اہلکارو ں نے اس خوفناک آبی مخلوق کے جسم کو واپس سمندر میں دھکیلنے کیلئے کوششیں شروع کر دی ہیں۔