سمارٹ فون کی لت بچوںکی ذہنی اور دماغی صحت کے لیے نقصان دہ ہے، طبی ماہرین

لندن (اُردو نیوز) طبی ماہرین نے کہا ہے کہ بچوں میں سمارٹ فون کی لت ان کی ذہنی اور دماغی صحت کے لیے نقصان دہ ہے ۔برطانوی اخبار انڈی پنڈنٹ کی رپورٹ کے مطابق سمارٹ فون بچوں کے لیے بہت زیادہ نقصادن دہ ہوسکتے ہیں۔ خاص طورپر جب بچہ دو سال سے کم عمرکا ہو تو اس کے ہاتھ میں سمارٹ فون دینے سے سختی سے گریز کیا جانا چاہیے۔

یہ تحقیق سائنسی جریدے حفاظتی میڈیکل رپورٹ میں شائع کی گئی ہے۔ تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ ایک گھنٹے تک بچے کا سمارٹ فون استعمال کرنا اس میں ڈی پریشن، چڑچڑے پن، تھکاوٹ کے ساتھ ضبط نفس میں کمی سمیت کئی دوسرے عوارض کا باعث بن سکتا ہے۔ماہرین کا کہنا ہے کہ سمارٹ فون کے سب سے زیادہ نقصان دہ اثرات 14 سے 17سال کی عمر کے بچوں میں دیکھے گئے ہیں۔ماہرین کا کہنا ہے کہ چھوٹی عمر میں سمارٹ فون کے بہ کثرت استعمال کے عادی بچے بڑے ہونے کے بعد اپنے اعصاب پر قابو نہیں رکھ پائیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں