’’ اگر بچنا چاہتے ہو تو انہیں فروخت کر دو۔۔۔ ‘‘ مہاتیر محمد نے اسد عمر کو کیا تلقین کی؟ ملائیشین وزیر اعظم کے جاتے ہی تہلکہ خیز انکشاف ہوگیا

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) خبردار، یہ کام ہرگز مت کرنا، سب فروخت کر دو، ملائیشیا کے وزیراعظم مہاتیر محمد نے وزیر خزانہ اسد عمر کو خسارے والے تمام سرکاری ادارے فروخت کرنے کی تلقین کردی۔ تفصیلات کے مطابق معروف اور سینئر صحافی محمد مالک کی جانب سے وزیر خزانہ اور ملائیشیا کے وزیراعظم مہاتیر محمد کے درمیان ہوئی ایک ملاقات کا دلچسپ احوال بیان کیا گیا ہے۔تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے محمد مالک نے بتایا کہ وزیر خزانہ اسد عمر نے جب ملائیشیا کے وزیراعظم مہاتیر محمد سے ملاقات کی، تو اس دوران اسد عمر نے کہا کہ ان کی حکومت بھی ملائیشیا کی حکومت کی طرح خزانہ فنڈ قائم کرکے خسارے والے اداروں کی کارکردگی بہتر بنانے کی کوشش کرے گی۔ اس موقع پر ملائیشیا کے وزیراعظم مہاتیر محمد نے فوری ردعمل دیتے ہوئے وزیر خزانہ اسد عمر کو کہا کہ خبردار، ایسا ہرگز مت کرنا۔ خسارے والے تمام سرکاری ادارے فوری فروکت کر دو۔ مہاتیر محمد نے کہا کہ چاہے حکومت کچھ بھی کرلے، سرکاری اداروں کو منافع بخش نہیں بنایا جا سکتا۔ اس لیے سرکاری اداروں کی کارکردگی میں بہتری کیلئے وقت اور سرمایہ ضائع کرنے کی بجائے انہیں فروخت کر دیا جائے۔ خیال رہے کہ لائیشیا وزیراعظم تین روزہ دورہ پاکستان کے بعد وطن واپس روانہ ہو گئے ہیں۔وزیراعظم عمران خان نے ڈاکٹر مہا تیر محمد کو رخصت کیا۔ملائیشین وزیراعظم نے وطن واپس جانے سے پہلے جے ایف 17 تھنڈر طیارے کا معائنہ بھی کیا۔مہا تیر محمد کو جے ایف 17 تھنڈر طیارے سے متعلق بریفنگ دی گئی۔

اس موقع پر مہا تیر محمد نے پاک فضائیہ کی خصوصی جیکٹ زین تن کر رکھی تھی۔ملائیشین وزیراعظم تین روزہ دورے پر پاکستان تھے جو کہ آج مکمل ہو گیا ہے۔مہا تیر محمد کے دورہ پاکستان پر مختلف یاداشتوں پر دستخط کیے گئے۔گذشتہ روز صدرمملکت عارف علوی نے ملائیشیا کے وزیراعظم مہا تیر محمد کو نشان پاکستان عطاء کیا ۔ ملائیشین وزیراعظم کے اعزاز میںایوان صدر میں ہونے والی تقریب میں وزیراعظم عمران خان تینوں مسلح افواج کے سربراہان وفاقی وزراء اور دیگر اعلیٰ سیاسی اور عسکری حکام نے شرکت کی اس موقع پر صدر مملکت نے مہاتیر محمد کو نشان پاکستان سے نوازا۔ ملائیشیا کے وزیراعظم ڈاکٹر مہاتیرمحمد نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ یوم پاکستانپر مدعو کرنے پر حکومت پاکستان کا شکر گزار ہوں۔ ڈاکٹر مہاتیر محمد نے کہاکہ پاکستان کیساتھ ہمارے برادرانہ اور دوستانہ تعلقات کئی دہائیوں پر محیط ہیں۔انہوںنے کہاکہ صنعتی انقلاب سے طرز زندگی میں تبدیلی آتی ہے۔انہوںنے کہاکہ عصر حاضر کے تقاضے پورے کرنے کیلئے جدید ٹیکنالوجی سے استفادہ کرنا ہوگا۔انہوںنے کہاکہ پاکستان کیساتھ تمام شعبوں میں تعاون کو فروغ دینا چاہتے ہیں۔انہوںنے کہاکہ کسی بھی ملک کی افرادی قوت کا معاشی ترقی میں اہم کردار ہوتا ہے۔ انہوںنے کہاکہ پاکستان کا اعلیٰ ترین سول ایوارڈ’’نشان پاکستان‘‘ملنے پر شکر گزار ہوں۔مہاتیر محمد نے کہاکہ دونوں ملکوں کے درمیان سرمایہ کاری سے تعلقات مزید مستحکم ہونگے،پاکستان کو سیاحت کے شعبے کی ترقی کیلئے معاونت فراہم کرنے کیلئے تیار ہیں۔ انہوںنے کہاکہ پاکستان میں سیاحت کے فروغ سے تیزتر معاشی ترقی ہوگی۔