آئی ایم ایف پاکستان کو کتنا قرض فراہم کرے گا؟ حکومت کی کوششیں کامیاب،بڑی خبر آگئی

اسلام آباد (نیوزڈیسک) پاکستان کر قرض کی فراہمی کے حوالے سے آئی ایم ایف کا اہم بیان، پاکستانی حکومت کی جانب سے ممکنہ طور پر 10 ارب ڈالرز یا اس سے زائد قرض کی درخواست کیے جانے کا امکان، آئی ایم ایف کی جانب سے غور جاری۔ تفصیلات کے مطابق آئی ایم ایف ڈائریکٹر جیری رائیس کے مطابق پاکستان کے لئے کتنا قرض منظور ہوگا یہ ابھی طے نہیں کیا گیا۔ اس حوالے سے نئے چیف جلد ہی پاکستانی حکام سے ملاقات کریں گے۔ پاکستانی معاشی تجزیہ کاروں کے مطابق ملکی معاشی مسائل دیکھتے ہوئے لگتا یہی ہے کہ حکومت معیشت کو سہارا دینے کی خاطر آئی ایم سے 10 ارب ڈالر سے زائد قرض کا مطالبہ کر سکتی ہے۔ تاہم اس حوالے سے بین الاقوامی مالیاتی فنڈ کے ڈائریکٹر جیری رائیس کا کہان ہے کہ ادارے کا پاکستان سے بات چیت کا سلسلہ جاری ہے تاہم ابھی طے نہیں کیا کہ کتنا قرض پاکستان کے لئے منظور ہوگا۔ان کا کہنا تھا کہ اس لئے معاہدے کے بارے میں حتمی طور پر کچھ نہیں کہا جا سکتا۔ نئے چیف جلدی ہی پاکستانی حکام سے تعارفی ملاقات کریں گے۔ اس ملاقات کے دوران ہی پاکستان کو قرض کی فراہمی سے متعلق معاملات طے کیے جا سکتے ہیں۔ واضح رہے کہ پاکستان کی حکومت کی جانب سے کوشش ہے کہ معیشت کو سہارا دینے کیلئے آئی ایم ایف سے 10 سے 12 ارب ڈالرز کا قرض حاصل کیا جائے۔ تاہم پاکستان آئی ایم ایف سے قرض تب ہی حاصل کرے گا جب قرض فراہمی کی شرائط نرم کی جائیں گی۔ پاکستان کر قرض کی فراہمی کے حوالے سے آئی ایم ایف کا اہم بیان، پاکستانی حکومت کی جانب سے ممکنہ طور پر 10 ارب ڈالرز یا اس سے زائد قرض کی درخواست کیے جانے کا امکان، آئی ایم ایف کی جانب سے غور جاری۔