چین پاکستان میں کتنے ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کرنیولا ہے ؟ رقم جان کرآپ عمران خان کی تعریف کرنے پر مجبور ہوجائیں گے

اسلام آباد (مانٹرینگ ڈیسک) چین پاکستان میں کتنے ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کرنیولا ہے ؟ ایسی خبر جان کر آپ کہیں گے کہ تبدیلی آنہیں رہی تبدیلی آگئی وفاقی وزیر برائے میری ٹائم افئیرز سید علی حیدر زیدی نے کہا ہے کہ پاک چین اقتصادی راہداری منصوبوں کے علاوہ چین پاکستان کے اندر مختلف منصوبوں میں 9 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کر رہا ہے۔ منگل کو ایک نجی ٹی وی چینل سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت کی موثروکارآمد پالیسیوں کی وجہ سے بہت سے ممالک پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے میں دلچسپی رکھتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت ملکی معیشت کے استحکام کے لیے بڑے پیمانے پر اہم و ٹھوس اقدامات کر رہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ میرے پاس دو ایسی نئی فلاحی و ترقیاتی تجاویز ہیں جن سے روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے۔ وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ بہترین قومی مفاد کے معاملات پر تمام سٹیک ہولڈرز کے اتفاق رائے کے لیے سب کو آن بورڈ لیا جانا چاہیئے۔انہوں نے کہا کہ اپوزیشن اور حکومت کو مل بیٹھ کر تمام مسائل کے حل پر بات چیت کرنی چاہیئے۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کو سیاسی پوائنٹ سکورنگ کی بجائے مثبت اور تعمیری تنقید کرنی چاہیئے۔ ایک سوال کے جواب میں سید علی حید زیدی کا کہنا تھا کہ قومی احتساب بیورو (نیب) ایک آزاد قومی ادارہ ہے جو معاملات کی تحقیقات کے لیے کام کر رہا ہے۔

دوسری طرف سپریم کورٹ نے ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی کے سی ای او کی تقرری تک دواؤں کی قیمتوں میں اضافہ روک دیا۔سپریم کورٹ میں چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں دواؤں کی قیمتوں میں اضافے پر از خود نوٹس کی سماعت ہوئی۔دورانِ سماعت دوا ساز کمپنیوں کے وکیل مخدوم علی خان نے عدالت کو بتایا کہ حکومت اور دوا ساز کمپنیوں میں اتفاق رائے ہو چکا ہے، ڈالر کی قیمت میں اضافے سے قیمتوں پر فرق پڑے گا تاہم حکومتی نوٹیفیکشن تک دواؤں کی قیمتوں میں اضافہ نہیں ہوگا۔ڈپٹی اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا کہ دواؤں کی قیمتوں کے لیے ڈریپ اپنی سفارشات آئندہ ہفتے کابینہ کو بھجوائے گی، کابینہ کے فیصلے کے بعد دواؤں کی قیمتوں کا نوٹیفیکشن جاری ہو گا۔

اس موقع پر جسٹس اعجاز الاحسن نے کہاکہ نوٹی فیکشن جاری ہونے تک دواؤں کی قیمتیں منجمد رہیں گی۔عدالت نے ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی کا مستقل سی ای او تعینات نہ ہونے پر برہمی کا بھی اظہار کیا۔چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ عدالت کے حکم پر تعیناتی کیوں نہیں ہوئی؟عدالت نے سیکریٹری صحت کو ڈریپ سی ای او کی سمری تیار کرنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ سیکریٹری دو دن میں سمری بھجوائیں اور مجاز اتھارٹی15 دن میں سمری پر فیصلہ کرے۔چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دیئے کہ سیکریٹری صحت دو دن میں سی ای او کے تقرر کی سمری تیار کریں گے، جب تک حکومتی نوٹی فکیشن جاری نہیں ہوتا دواؤں کی قیمتیں نہیں بڑھیں گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں