بجلی ، گیس اور پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں واضح کمی کر کے منجمد کیا جائے ‘ سابق چیئرمین پی سی سی

لاہور (نیوز ڈیسک) سابق چیئرمین پرائس کنٹرول کمیٹی میاں عثمان نے کہا ہے کہ بجلی کی قیمتوں میں اضافے سے زندگی کے ہر شعبے پر منفی اثرات مرتب ہوں گے اس لئے فیصلے کوفی الفور فیصلہ لیا جائے ، سرکاری محکموں میں کام کرنیوالے کنٹریکٹ اور ڈیلی ویجز ملازمین کو نوکریوں سے نکالنے کی بازگشت سے ہزاروں خاندانوں میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے ۔

اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی حکومت کو اپنے منشور میں کئے گئے وعدوں کے مطابق عوام کو ریلیف دینے کیلئے اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے لیکن اس کے برعکس مزید بوجھ ڈالنے کے فیصلے کئے جارہے ہیں۔ بجلی کی قیمتوں میں اضافہ کر دیا گیا ہے جبکہ گیس کی قیمتوں میں بھی کئی گنا اضافے کیلئے تیاریاں جاری ہیں ۔

مطالبہ ہے کہ حکومت بجلی ، گیس اور پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں واضح کمی کر کے انہیں کم از کم ایک سال کیلئے منجمد کر دے ۔ سرکاری ادارے استعداد نہ ہونے اورچوری روکنے میںناکامی کی سزا عوام کو نہ دیں ۔ میاں عثمان انہوں نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی نے حکومت میں آکر دو کروڑ نوکریاں دینے کا اعلان کیا تھا

لیکن سرکاری محکموں میں کام کرنے والے کنٹریکٹ اور ڈیلی ویجز ملازمین کو ان کے روزگار کا تحفظ دینے کی بجائے انہیں بیدخل کرنے کے فیصلے کی جانب بڑھا جارہا ہے جو قابل مذمت ہے اور اسے کسی طور پر قبول نہیں کیاجائے گا۔ ایسی اطلاعات سے ہزاروں خاندانوں میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے اس لئے حکومت کو چاہیے کہ ایسی خبروں اور اطلاعات کو رد کرنے کیلئے فی الفور وضاحت کر ے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں