الیکشن کے بعد ڈالر کی قیمت میں مسلسل کمی ، اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت 130 روپے سے کم ہو کر 124 روپے ہو گئی ، وجہ جان کر آپ بھی حیران رہ جائیں گے

پاکستان تحریک انصاف کی عام انتخابات میں برتری کے بعد ڈالر کے ریٹ میں بھی انتہائی حیران کن حد تک کمی آئی ہے جس کے باعث پاکستانی نہال ہیں ۔ عام انتخابات کے بعد اوپن مارکیٹ میں ڈالر ایک دن میں 6 روپے سستا ہوا ہے اور اس کی قیمت 130 روپے سے کم ہو کر 124 روپے ہو گئی ہے مگر حکومت انتخابات کے بعد اچانک ڈالر کے ریٹ میں اتنی کمی کیوں ہوئی ہے ؟ اس کی حیران وجہ بھی سامنے آ گئی ہے جو یقینا آپ کو بھی حیرت میں مبتلا کر دے گی ۔ پاکستان کا دوست ملک چین پاکستان میں اربوں ڈالر کے منصوبوں پر کام کر رہا ہے اور اب عمران خان کے وزیراعظم بنتے ہی اس کی طرف سے پاکستان پر ڈالروں کی مزید بارش کی گئی ہے ۔ چین نے پاکستان کو مزید 2 ارب ڈالر قرض فراہم کرنے کا اعلان کیا تھا جس میں سے ایک ارب ڈالر موصول ہو گیا ہے ۔

وزارت خزانہ اوراسٹیٹ بینک آف پاکستان کے ذرائع نے بتایا ہے کہ ” ان دو ارب ڈالر میں سے ایک ارب ڈالر پہلے ہی سٹیٹ بینک کے اکاﺅنٹس میں آ چکے ہیں اور 2 اگست کو بینک کی طرف سے جو ڈیٹا جاری کیا جائے گا اس میں یہ موجود ہوں گے ۔ چین کی طرف سے یہ رقم ملنے کے بعد ہمارے فارن کرنسی کے ذخائر 10 ارب ڈالر سے زائد ہو جائیں گے ۔“ چین کی طرف سے ایک ارب ڈالر ملنے کے بعد مارکیٹ میں ڈالر وافر مقدار میں پایا جا رہا ہے جس کے باعث اس کی قیمت میں بھی خاصی کمی ہوئی ہے اور یقینا اس سے ملک میں مہنگائی بھی کم ہو گی ۔ یہاں یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ تحریک انصاف کی حکومت کے متوقع وزیرخزانہ اسد عمر نئے قرضے حاصل کرنے کا عندیہ دیتے ہوئے کہا تھا کہ ” پاکستان کا معاشی بحران اس قدر سنگین ہے کہ اس کیلئے ہنگامی اقدامات اٹھانے پڑیں گے اور آئی ایم ایف سمیت کسی بھی آپشن کو استعمال کیا جا سکتا ہے ۔“